مضامین  

اَوَّلیاتِ حضرت عمر فاروقِ اعظم

اَوَّلیاتِخلیفۂ دوم امیر المومنین حضرت عمر فاروقِ اعظم رضی اللہ تعالیٰ عنہ عسکر ی کہتے ہیں کہ حضر ت عمر ر ضی اللہ تعالیٰ عنہ وہ پہلے شخص ہیں جن کو ا میر المو منین سے مو سوم کیا گیا۔(آپ کی اوّلیا ت میں خا ص طو ر پر قا بلِ ذکر با تیں یہ ہیں):۱ ۔    آپ ہی وہ پہلے شخص ہیں جنھوں نے تا ریخ و سالِ ہجری جا ری کیا۔۲۔    بیت الما ل قا ئم کیا۔۳۔    ما ہِ رمضا ں میں تراویح کی نما ز با جما عت جا ری فرمائی۔۴۔&nbsp...

مختصر تذکرہ حضرت عمر بن خطاب رضی اللہ عنہ

مختصر تذکرہ حضرت عمر بن خطاب رضی اللہ عنہ خلیفۂ دوم جانشین پیغمبر حضرت عمر فاروقِ اعظم رضی اللہ تعالیٰ عنہ کی کنیت ""ابوحفص"" اورلقب ""فاروق اعظم""ہے۔ آپ رضی اللہ تعالیٰ عنہ اشرافِ قریش میں اپنی ذاتی وخاندانی وجاہت کے لحاظ سے بہت ہی ممتاز ہیں ۔ آٹھویں پشت میں آ پ رضی اللہ تعالیٰ عنہ کا خاندانی شجرہ رسول اللہ عزوجل وصلی اللہ تعالیٰ علیہ والہ وسلم کے شجرۂ نسب سے ملتاہے ۔آپ واقعہ فیل کے تیرہ برس بعد مکہ مکرمہ میں پیداہوئے اوراعلان نبوت کے چھٹے سال...

سراپائےحضرت عمر فاروقِ اعظم

سراپائےخلیفۂ دوم امیر المومنین حضرت عمر فاروقِ اعظم رضی اللہ تعالیٰ عنہ   ابنِ سعد رحمۃ اللہ تعالٰی علیہ اور حاکم رحمۃ اللہ تعالٰی علیہ زر رضی اللہ تعا لی عنہ کے حوالے سے بیان کرتے ہیں کہ عید کے دن میں مدینے کے لوگوں کے ساتھ شہر سے باہر نکلا تو میں نے حضرت عمر رضی اللہ تعالیٰ عنہ کو پیدل جاتے ہوئے دیکھا،آپ کارنگ گندمی تھا۔خود پہننے کی وجہ سے آپ کے سر کے بال گر گئے تھے۔آپ کاقد لمبا تھا،آپ کا سر دوسرے لوگوں کے سروں سے اونچا معلوم ہوتا تھا ...

اَسبابِ شہادت حضرت عمر فاروقِ اعظم

امام زہری رحمتہ اللہ تعالیٰ علیہ کہتے ہیں کہ حضرت عمر رضی اللہ تعالی عنہ کا طریقۂ کار یہ تھا کہ وہ کسی نا بالغ لڑکے کو مدینہ منورہ میں باہر سے داخل نہیں ہو نے دیتے تھے۔ ایک بار حاکم ِکوفہ حضرت مغیرہ بن شعبہ رضی اللہ تعالیٰ عنہ نے کوفہ سے آپ کو لکھا کہ یہاں ایک بہت ہی ہو شیار اور کا ریگر لڑکا موجود ہے، اس کو بہت سے ہنر آتے ہیں لوہار اور بڑھئ کا کام اچھی طرح جانتا ہے۔ نقّاشی بھی بہت عمدہ کرتا ہے، اگر آپ اس کو مدینے میں داخلے کی اجازت دے دیں تو م...

امیرالمؤمنین حضرت عمر بن خطاب

امیرالمؤمنین حضرت عمر بن خطاب نام و نسب: اسمِ گرامی: حضرت عمر رضی اللہ عنہ۔ کنیت: ابوالحفص۔ لقب: فاروق اعظم ۔اورسلسلہ نسب اسطرح ہے: عمر بن خطاب ،بن فضیل ،بن عبدالغریٰ ،بن ریاح ،بن عبداللہ، بن فرط، بن زراح ،بن عدی ،بن کعب،بن لوی۔ آپ کی والدہ کا نام حنتمہ بنت ہشام ،بن مغیرہ ، بن عبداللہ، بن عمر وبن مخزوم بن یقظہ بن مرہ بن کعب ۔یہ حضرت خالد بن رضی اللہ عنہ کی چچازاد بہن تھیں۔آپ کا نسب والد کی طرف سے حضور ﷺکے نسب نامہ کعب پر ملتا ہے۔(شریف التواریخ۔ال...

اصل سکندرِ اعظم کون تھا؟

مقدونیہ کا الیگزینڈر یا تاریخ اسلا م کے حضرت عمر فاروق رضی اللہ تعالیٰ عنہ؟ مقدونیہ کا الیگزینڈر بیس سال کی عمر میں بادشاہ بنا، 23 سال کی عمر میں مقدونیہ سے نکلا، اس نے سب سے پہلے پورا یونان فتح کیا، اس کے بعد وہ ترکی میں داخل ہوا، پھر ایران کے دارا کو شکست دی، پھر وہ شام پہنچا، پھر اس نے یروشلم اور بابل کا رخ کیا، پھر وہ مصر پہنچا، پھر وہ ہندوستان آیا، ہندوستان میں اس نے پورس سے جنگ لڑی، اپنے عزیز از جان گھوڑے کی یاد میں پھالیہ شہر آباد کیا، مکر...

سراپائےحضرت عمر فاروقِ اعظم

سراپائےخلیفۂ دوم امیر المومنین حضرت عمر فاروقِ اعظم رضی اللہ تعالیٰ عنہ   ابنِ سعد رحمۃ اللہ تعالٰی علیہ اور حاکم رحمۃ اللہ تعالٰی علیہ زر رضی اللہ تعا لی عنہ کے حوالے سے بیان کرتے ہیں کہ عید کے دن میں مدینے کے لوگوں کے ساتھ شہر سے باہر نکلا تو میں نے حضرت عمر رضی اللہ تعالیٰ عنہ کو پیدل جاتے ہوئے دیکھا،آپ کارنگ گندمی تھا۔خود پہننے کی وجہ سے آپ کے سر کے بال گر گئے تھے۔آپ کاقد لمبا تھا،آپ کا سر دوسرے لوگوں کے سروں سے اونچا معلوم ہوتا تھا ...

تذکرۂ حضرت عمر فاروق

خلیفۂ دوم جانشین پیغمبر حضرت عمر فاروقِ اعظم رضی اللہ تعالیٰ عنہ کی کنیت ""ابوحفص"" اورلقب ""فاروق اعظم""ہے۔ آپ رضی اللہ تعالیٰ عنہ اشرافِ قریش میں اپنی ذاتی وخاندانی وجاہت کے لحاظ سے بہت ہی ممتاز ہیں ۔ آٹھویں پشت میں آ پ رضی اللہ تعالیٰ عنہ کا خاندانی شجرہ رسول اللہ عزوجل وصلی اللہ تعالیٰ علیہ والہ وسلم کے شجرۂ نسب سے ملتاہے ۔آپ واقعہ فیل کے تیرہ برس بعد مکہ مکرمہ میں پیداہوئے اوراعلان نبوت کے چھٹے سال ستائیس برس کی عمر میں مشرف بہ اسلام ہوئے ...

اَوَّلیاتِ حضرت عمر فاروقِ اعظم

اَوَّلیاتِخلیفۂ دوم امیر المومنین حضرت عمر فاروقِ اعظم رضی اللہ تعالیٰ عنہ عسکر ی کہتے ہیں کہ حضر ت عمر ر ضی اللہ تعالیٰ عنہ وہ پہلے شخص ہیں جن کو ا میر المو منین سے مو سوم کیا گیا۔(آپ کی اوّلیا ت میں خا ص طو ر پر قا بلِ ذکر با تیں یہ ہیں):۱ ۔    آپ ہی وہ پہلے شخص ہیں جنھوں نے تا ریخ و سالِ ہجری جا ری کیا۔۲۔    بیت الما ل قا ئم کیا۔۳۔    ما ہِ رمضا ں میں تراویح کی نما ز با جما عت جا ری فرمائی۔۴۔&nbsp...

مختصر تذکرہ حضرت عمر بن خطاب رضی اللہ عنہ

مختصر تذکرہ حضرت عمر بن خطاب رضی اللہ عنہ خلیفۂ دوم جانشین پیغمبر حضرت عمر فاروقِ اعظم رضی اللہ تعالیٰ عنہ کی کنیت ""ابوحفص"" اورلقب ""فاروق اعظم""ہے۔ آپ رضی اللہ تعالیٰ عنہ اشرافِ قریش میں اپنی ذاتی وخاندانی وجاہت کے لحاظ سے بہت ہی ممتاز ہیں ۔ آٹھویں پشت میں آ پ رضی اللہ تعالیٰ عنہ کا خاندانی شجرہ رسول اللہ عزوجل وصلی اللہ تعالیٰ علیہ والہ وسلم کے شجرۂ نسب سے ملتاہے ۔آپ واقعہ فیل کے تیرہ برس بعد مکہ مکرمہ میں پیداہوئے اوراعلان نبوت کے چھٹے سال...

اَسبابِ شہادت حضرت عمر فاروقِ اعظم

امام زہری رحمتہ اللہ تعالیٰ علیہ کہتے ہیں کہ حضرت عمر رضی اللہ تعالی عنہ کا طریقۂ کار یہ تھا کہ وہ کسی نا بالغ لڑکے کو مدینہ منورہ میں باہر سے داخل نہیں ہو نے دیتے تھے۔ ایک بار حاکم ِکوفہ حضرت مغیرہ بن شعبہ رضی اللہ تعالیٰ عنہ نے کوفہ سے آپ کو لکھا کہ یہاں ایک بہت ہی ہو شیار اور کا ریگر لڑکا موجود ہے، اس کو بہت سے ہنر آتے ہیں لوہار اور بڑھئ کا کام اچھی طرح جانتا ہے۔ نقّاشی بھی بہت عمدہ کرتا ہے، اگر آپ اس کو مدینے میں داخلے کی اجازت دے دیں تو م...

امیرالمؤمنین حضرت عمر بن خطاب

امیرالمؤمنین حضرت عمر بن خطاب نام و نسب: اسمِ گرامی: حضرت عمر رضی اللہ عنہ۔ کنیت: ابوالحفص۔ لقب: فاروق اعظم ۔اورسلسلہ نسب اسطرح ہے: عمر بن خطاب ،بن فضیل ،بن عبدالغریٰ ،بن ریاح ،بن عبداللہ، بن فرط، بن زراح ،بن عدی ،بن کعب،بن لوی۔ آپ کی والدہ کا نام حنتمہ بنت ہشام ،بن مغیرہ ، بن عبداللہ، بن عمر وبن مخزوم بن یقظہ بن مرہ بن کعب ۔یہ حضرت خالد بن رضی اللہ عنہ کی چچازاد بہن تھیں۔آپ کا نسب والد کی طرف سے حضور ﷺکے نسب نامہ کعب پر ملتا ہے۔(شریف التواریخ۔ال...