جس کو کچہہ حب مصطفی ہی نہیں

جس کو کچہہ حب مصطفی ہی نہیں
اُس کے ایمان کا پتا ہی نہیں

جو نہیں تابع رسول اللہ۔
تابع امر کبریا ہی نہیں۔

ہے وہ یکتا ہے عالم ایجاد
اُس کا ثانی کوئی ہو ہی نہیں۔

خبررہ رسم دین مصطفوی
دوسرا مسکن صفاہی نہیں

اے خدائے کریم تیرے سوا۔
دوسرا اعطی وعطا ہے نہیں

کر عطا میرے مطلب دل کو
تجھ سے مطلب کوئی چھپا ہی نہیں

جزیتری آستان رحمت کے۔
اہل حاجت کی التجا ہی نہیں۔

ان تو غیر از زیارت نبوی۔
اور کاؔفی کا مدعا ہی نہیں۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔(دیوانِ کافؔی)


متعلقہ

تجویزوآراء