اے بہار زندگی بخش مدینہ مرحبا

اے بہار زندگی بخش مدینہ مرحبا

اے بہارِ زندگی بخشِ مدینہ مرحبا
اے فضائے جانفزائے باغِ طیبہ مرحبا

غنچۂ پژمردۂ دل کو شگفتہ کردیا
مرحبا اے بادِ صحرائےمدینہ مرحبا

سرمہ نور نصر ہو آ کے میری آنکھ میں
مرحبا  صد مرحبا اے خاکِ بطحا مرحبا

تو نے ان آنکھوں کو دکھلائی مدینہ کی بہار
مرحبا جود و نوالِ شاہ طیبہ مرحبا

دل نثار قبہ خضرائے شاہنشاہ دیں
جاں فدائے آستانِ عرش پایہ مرحبا

آستانِ پاک پر امیدواروں کے ہجوم
رحمتِ عالم سے کہتے ہیں کریما مرحبا

یہ نعیم الدین اور طیبہ کے جلوے یا عجب
مرحبا فضل و عطائے شاہ طیبہ مرحبا


متعلقہ

تجویزوآراء