ضیائے کرامات  

سمندری طوفان تھم گیا

سمندری طوفان تھم گیا پہلے حج سے واپسی پر جب کہ آ پ والدین کے ہمراہ بحری جہاز سے تشریف لا رہے تھے راستے میں سَمندری طوفا ن آگیا۔خود ہی ارشادفرماتے ہیں: واپسی میں تین دن طوفانِ شدید رہا تھا، اِس کی تفصیل میں بہت طول ہے ۔ لوگوں نے کفن پہن لئے تھے۔ حضرتِ والدہ ماجدہ کا اضطراب دیکھ کر اُ ن کی تسکین کے لیے بے ساختہ میری زبان سے نکلا کہ آپ اطمینا ن رکھیں ، خدا کی قسم !یہ جہاز نہ ڈوبے گا ۔ یہ قسم میں نے حدیث ہی کے اطمینا ن پر کھائی تھی جس میں کشتی پ...

میں دوبارہ زندہ ہو چکا تھا

میں دوبارہ زندہ ہو چکا تھا مفتی غلام سرورقادری رضوی صاحب اپنی کتاب ’’الشاہ احمد رضا‘‘ میں ایک واقعہ بیان فرماتے ہیں کہ: اعلیٰ حضرت امام احمد رضا خان کی ایک زندہ کرامت’’شیخ حبیب الرحمن ‘‘کے نام سے آج بھی لاہور میں موجود ہے ۔ شیخ حبیب الرحمن صاحب ’’پراسیکیوٹنگ ڈپٹی سپرنٹنڈنٹ پولیس ‘‘(حال متعین محکمہ انٹی کر پشن لاہور1971) نے 11اپریل 1971کو اعلیٰ حضرت﷫کے 51ویں عُرسِ مبارک کے ...

موسم تبدیل ہو گیا

موسم تبدیل ہو گیا مولانا محمد حسین میرٹھی صاحب کا بیان ہے کہ: ایک مرتبہ میں بریلی شریف گیا ،دو دن رہ کر سنا کہ آج حضرت ایک موضع(دیہات) کو تشریف لے جائیں گے، آپ کے ایک مرید خان صاحب نے دعوت کی ہے، کچھ لوگ ہمراہ جائیں گے ۔ میں نے یہ خیال کر کے کہ آپ کی کثیر صحبت میسر ہو گی ہمرکاب چلنے کی اجازت لے لی ۔ غالباً قریبِ عصر ٹرین وہاں پہنچی، اسٹیشن پر اتر کر نماز پڑھی گئی،بعد ازاں بیل گاڑیوں میں ہم سب سوار ہوئے اور اعلیٰ حضرت﷫پالکی میں سوار ہوئے۔وہ ...

خربوزہ میٹھا ہوگیا

خربوزہ میٹھا ہوگیا جنابِ سید ایوب علی صاحب فرماتے ہیں کہ: سیدمحمود جان صاحب ساکن’’محلہ گڑھی‘‘نے فرمایاکہ ایک روز مولانا سید سلیمان اشرف صاحب بہاری پروفیسر دینیات علی گڑھ یونیورسٹی اعلیٰ حضرت کی خدمت میں حاضر تھے اور کچھ پھل خربوزہ کے رکھے ہوئے تھے ۔ بایمائے(باجازتِ)اعلیٰ حضرت پھل مولانا ممدوح نے اٹھایا اور گیارہ مرتبہ سورہ اخلاص پڑھ کر تراشا تو پھیکا نکلا ، اس کے بعداعلیٰ حضرت نے صرف ایک بارسورۃ اخلاص پڑھ کرتراشاتو میٹھ...

ایک ولی نے ایک ولی سے ملاقات کی

ایک ولی نے ایک ولی سے ملاقات کی ’’تجلیاتِ امام احمد رضا ‘‘ میں ہے کہ : غالباً 1320ھ میں حضورِ اعلیٰ حضرت ’’بیسلپور‘‘ حضرت مولاناعرفان علی صاحب بیسلپوری کے دولت خانے پر تشریف لے گئے اور مولاناعرفان علی صاحب سے فرمایا کہ کیا اس بستی میں کسی ولی اللہ کا مزار شریف ہے؟ انہوں نے عرض کیا حضور! یہاں تو کسی مشہور ولی کا مزار میری نظر میں نہیں ۔ اعلیٰ حضرت نے ارشاد فرمایا مجھے تو’’ولی اللہ&lsqu...

مزید تازہ ترین

پسندیدہ کرامات  

چادردیکھ کر آگ بجھ گئی

روایت میں ہے آپ رضی اللہ  تعالیٰ عنہ کی خلافت کے دور میں ایک مرتبہ ناگہاں ایک پہاڑ کے غار سے ایک بہت ہی خطرناک آگ نمودار ہوئی جس نے آس پاس کی تمام چیزوں کو جلا کر راکھ کا ڈھیر بنادیا،جب لوگوں نے دربار خلافت میں فریاد کی تو امیر المؤمنین رضی اللہ  تعالیٰ عنہ نے حضرت تمیم داری رضی اللہ  تعالیٰ عنہ کو اپنی چادر مبارک عطافرمائی اور ارشادفرمایا کہ تم میری یہ چادر لے کر آگ کے پاس چلے جاؤ ۔ چنانچہ حضرت تمیم داری رضی اللہ  تعالیٰ...

گمشدہ بچہ کی واپسی

 حضرت خواجہ معین الدین نے ایک اور واقعہ بیان کیا ہے کہ ایک شخص حضرت خواجہ عثمان رحمۃ اللہ علیہ کی خدمت میں حاضر ہوا اور عرض کی کہ اتنا عرصہ ہوا کہ میرا لڑکا گم ہوگیا ہے مجھے کوئی خبر نہیں کہ وہ کہاں ہے مہربانی فرماکر توجہ فرمائیں، حضرت خواجہ نے یہ بات سنی اور مراقبے میں چلے گئے، تھوڑی دیر بعد سر اٹھایا اور فرمایا کہ تمہارا لڑکا گھر پہنچ گیا ہے، وہ شخص گھر گیا لڑکے کو گھر پر موجود پایا وہ خوشی میں لڑکے کو ساتھ لے کر اُسی وقت حضرت خواجہ کی خدم...

قبر میں بدن سلامت

ولید بن عبدالملک اموی کے دور حکومت میں جب روضہ منورہ کی دیوار گر پڑی اوربادشاہ کے حکم سے تعمیر جدیدکے لیے بنیادکھودی گئی توناگہاں بنیادمیں ایک پاؤں نظر آیا، لوگ گھبراگئے اورسب نے یہی خیال کیا کہ یہ حضور نبی اکرم صلی اللہ  تعالیٰ علیہ والہ وسلم کا پائے اقدس ہے لیکن جب عروہ بن زبیر صحابی رضی اللہ  تعالیٰ عنہمانے دیکھا اور پہچانا پھر قسم کھا کر یہ فرمایا کہ یہ حضورانورصلی اللہ  تعالیٰ علیہ والہ وسلم کامقدس پاؤں نہیں ہے بلکہ یہ امیرا...

مارسے زلزلہ ختم

امام الحرمین نے اپنی کتاب ’’الشامل‘‘میں تحریر فرمایا ہے کہ ایک مرتبہ مدینہ منورہ میں زلزلہ آگیا اورزمین زوروں کے ساتھ کانپنے اورہلنے لگی۔ امیر المؤمنین حضرت عمر رضی اللہ  تعالیٰ عنہ نے جلا ل میں بھر کرزمین پر ایک درہ مار ااور بلندآواز سے تڑپ کر فرمایا: قِرِّیْ اَلَمْ اَعْدِلْ عَلَیْکِ  (اے زمین !ساکن ہوجا کیا میں نے تیرے اوپر عدل نہیں کیاہے) آپ کا فرمان جلالت نشان سنتے ہی زمین ساکن ہوگئی اورزلزلہ ختم ہوگیا۔(حج...

یزیدی کی عبرت ناک موت

یزیدی کی عبرت ناک موت گستاخ وبد لگام یزیدی کا ہاتھو ں ہاتھ بھیانک انجام دیکھ کر بھی بجائے عبرت حاصل کرنے کے اسکو اتفاقی امر سمجھتے ہوئے ایک بے باک یزیدی نے بکا:آپ کو اللہ عزوجل کے رسول ﷺسے کیانسبت؟یہ سن کر قلبِ امام عالی مقام کو سخت ایذاء پہنچی اور تڑپ کر دعامانگی :’’ اے ربِ جبارعزوجل اس بد گفتارکو عذاب میں گرفتار فرما‘‘ دعا کا اثرہاتھوں ہاتھ ظاہر ہوا، اس بکواسی کو ایک دم قضائے حاجت کی ضرورت پیش آئی ،فوراً گھوڑے سے اتر کر ...

مزید پسندیدہ