ضعیف، موضوع اور من گھڑت روایات  

حدیث کا حکم" جو مجھے صفر کے مہینے کی خوشخبری دے اسے جنت کی بشارت ہے"؟

حضور صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:اگرکوئی شخص مجھے صفرکامہینہ شروع ہونے یاختم ہونے کی خبردے تومیں اس کوجنت کی خوشخبری دیتاہوں اس حدیث کے کونسے الفاظ درست ہیں؟ الجواب بعون الملك الوهاب اس روایت کے کوئی بھی الفاظ درست نہیں بلکہ یہ روایت موضوع ہے اوراس کی کوئی اصل نہیں ہے ۔  کشف الخفاء میں ہے: "« مَنْ بَشَّرَنِيْ بِخُرُوْجِ صَفَرٍ بَشَّرْتُهُ بِالْجَنَّةِ». قَاْلَ الْقَاْرِيْ: فِيْ الْمَوْضُوْعَاْتِ، تَبْعًا لِلصَّغَاْنِيْ: لَاْ أَ...

کیا معراج میں حضورعلیہ السلام نعلین پہن کر گئے تھے؟

نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم جب معراج پہ گئے تو کیا نعلین پاک پہن کر گئے تھے؟  جیسا کہ مقررین سے ہم نے سن رکھا ہے۔ الجواب بعون الملك الوهاب یہ روایت  موضوع اور من گھڑت  ہے کہ نبی کریم  صلی اللہ تعالی  علیہ وسلم معراج کی رات نعلین شریفین پہن کر گئے تھے۔[ فتاوى  شارح بخاری،عقائد نبوت، جلد1،صفحہ 306،مكتبہ برکات المدینہ کراچی]۔...

"فرشتے ہاورت وماروت عورت کے عشق میں مبتلا ہوگئے تھے" یہ روایت درست ہے؟

الله تعالی کے فرشتے کیا گناہوں سے پاک ہیں اور کیا  ہاروت اور ماروت والا جو واقعہ مشہور ہےکہ وہ ایک عورت کے عشق میں مبتلاہوگئے تو اللہ تعالی نے ان کو عذاب میں مبتلا کردیا اور اب تک وہ عذاب میں ہیں  کیا درست ہے؟ الجواب بعون الملك الوهاب ہارو ت وماروت کے واقعہ کو مفسرین نے رد کیا ہے حضور صلی اللہ علیہ وسلم سے اس واقعہ کے متعلق صحیح یا ضعیف کوئی روایت منقول نہیں ہے یہ واقعہ ان آیات کے بھی خلاف ہے جن میں فر شتوں کی عصمت کو بیان کیا گیا لہذا...

یہ روایت من گھڑت ہے"حضرت بلال نے اذان نہ دی تو فجر طلوع نہ ہوئی"

  کیا فرماتے ہیں علماء کرام اس واقعہ کے بارے  میں جو حضرت بلال رضی اللہ تعالیٰ عنہ کے بارے میں مشہو ر ہے کہ حضرت بلال رضی اللہ تعالیٰ عنہ جب اذان دیتے تو وہ "شین" کی ادائیگی صحیح نہیں اداکرتے تھے  توبعض لوگوں  نے اعتراض کیا اور حضورﷺ کو شکایت کی تو حضور ﷺ نے دوسرا مؤذن مقرر کر دیا ۔ تو جب حضرت بلال رضی اللہ تعالیٰ عنہ نے  اذان نہیں دی تو صبح بھی طلوع نہیں  ہوئی۔اگر اس واقعہ کی قرآن و حدیث میں کوئی حقیقت ہو تو برائے...

جو مسلمان حق اور سچ بولنے سے باز رہے یا باطل کو زبان سے نہ روکے تو ایسے شخص کو حدیث شریف میں گونگا شیطان فرمایا گیا ہے برائے مہربانی حوالہ عنایت فرماد

جو مسلمان حق اور سچ بولنے سے باز رہے یا باطل کو زبان سے نہ روکے تو ایسے شخص کو حدیث شریف میں گونگا شیطان فرمایا گیا ہے برائے مہربانی حوالہ عنایت فرمادیں۔ (محمد فرخ شان القادری ، کراچی پاکستان)الجواب بعون الملك الوهاب یہ حدیث نہیں بلکہ استاد ابوعلی دقاق کا قو ل ہے، جیساکہ رسالہ قشیریہ میں ابو القاسم قشیری رضی اللہ عنہ فرماتے ہے ۔ الأستاذ أبا علي الدقاق يقول: من سكت عن الحق فهو شيطان أخرس. (الرسالۃ القشیریۃ،الجزء الاول ،ص۵۷،شرح النووی ،ج۲،ص۲۰) ...