مناقب  

Bakar Bin Muhammad

جاں بلب ہوں آ مری جاں الغیاثہوتے ہیں کچھ اور ساماں الغیاث درد مندوں کو دوا ملتی نہیںاے دواے درد منداں الغیاث جاں سے جاتے ہیں بے چارے غریبچارہ فرماے غریباں الغیاث حَد سے گزریں درد کی بے دردیاںدرد سے بے حد ہوں نالاں الغیاث بے قراری چین لیتی ہی نہیںاَے قرارِ بے قراراں الغیاث حسرتیں دل میں بہت بے چین ہیںگھر ہوا جاتا ہے زنداں الغیاث خاک ہے پامال میری کُو بہ کُواے ہواے کوے جاناں الغیاث المدد اے زُلفِ سرور المددہوں بلاؤں میں پریشاں الغیاث دلِ کی اُلجھن...

Too hai Woh Ghous k Har Ghous Hai Shaida Tera

تو ہے وہ غوث کہ ہر غوث ہے شیدا تیراتو ہے وہ غیث کہ ہر غیث ہے پیاسا تیرا سورج اگلوں کے چمکتے تھے چمک کر ڈوبےافقِ نور پہ ہے مہر ہمیشہ تیرا مرغ سب بولتے ہیں بول کے چپ رہتے ہیںہاں اصیل ایک نوا سنج رہے گا تیرا جو ولی قبل تھے یا بعد ہوئے یا ہوں گےسب ادب رکھتے ہیں دل میں مِرے آقا تیرا بقسم کہتے ہیں شاہانِ صریفین و حریمکہ ہوا ہے نہ ولی ہو کوئی ہمتا تیرا تجھ سے اور دہر کے اقطاب سے نسبت کیسیقطب خود کون ہے خادم تِرا چیلا تیرا سارے اقطاب جہاں کرتے ہیں کعبے ک...

Al Aaman Qahar Hai Ya Ghous Woh Teekha Tera

الاماں قہر ہے اے غوث وہ تیکھا تیرامر کے بھی چین سے سوتا نہیں مارا تیرا بادلوں سے کہیں رکتی ہے کڑکتی بجلیڈھالیں چھنٹ جاتی ہیں اٹھتا ہے جو تیغا تیرا عکس کا دیکھ کے منھ اور بھپر جاتا ہےچار آئینہ کے بل کا نہیں نیزا تیرا کوہ سرمکھ ہو تو اِک وار میں دو پَر کالےہاتھ پڑتا ہی نہیں بھول کے اوچھا تیرا اس پہ یہ قہر کہ اب چند مخالف تیرےچاہتے ہیں کہ گھٹا دیں کہیں پایہ تیرا عقل ہوتی تو خدا سے نہ لڑائی لیتےیہ گھٹائیں، اُسے منظور بڑھانا تیرا وَرَفَعْنَا لَکَ ذِکْ...

Aah Ya Ghousa

آہ یا غَوثاہ یا غیثاہ یا امداد کُنیَا حَیَاۃَ الْجُوْد یَا رُوْحَ الْمَنَا امداد کُن یَا وَلِیَ الْاَوْلِیَآء اِبْنَ نَبِیِّ الْاَنْبِیَآءاے کہ پایت بر رِقابِ اَولیا امداد کُن دست بخشِ حضرتِ حمّاد زیبِ دستِ خوداز تو دَستے خواہَد ایں بے دست و پا امداد کُن مجمعِ ہر دو طریق و مرجعِ ہر دو فریق فاصلان و واصلاں را مقتدا امداد کُن واشیاں بر بندہ از ہر سو ہجوم آوردہ اندیَا عَزُوْمًا قَاتِلًا عِنْدَ الْوَغَا امداد کُن بہرِ ’’لَاخَوْفٌ...

Akseer e Azam

اکسیر اعظمقصیدۃ مجیدۃ مقبولۃ انشاء اللہ تعالیٰ فی منقبت سیدنا الغوث الاعظمرضی اللہ تعالیٰ عنہ مطلع تشبیب و ذکر، عاشق شُدن حبیبایکہ صد جاں بستہ در ہر گوشۂ داماں توئی دامن افشانی وجاں بار و چرا بیجاں توئیآں کدا میں سنگدل عیارۂ خونخوارۂ کر غمش باجانِ نازک درتپ ہجراں توئیسروِ ناز خویشتن را برکہ قمری کردۂ عندلیب کیستی چوں خود گلِ خنداں توئیہم رخاں آئینہ داری ہم لباں شکر شِکن خود بخود نغمہ آئی باز خود حیراں توئی جوئے خوں نرگس چہ ریزد گر بچشماں نرگ...

Akhund Mulla Muhammad Jamaluddin

اسیروں کے مشکل کشا غوث اعظمفقیروں کے حاجت رَوا غوث اعظم گھرا ہے بَلاؤں میں بندہ تمہارامدد کے لیے آؤ یا غوث اعظم ترے ہاتھ میں ہاتھ میں نے دیا ہےترے ہاتھ ہے لاج یا غوث اعظم مریدوں کو خطرہ نہیں بحرِ غم سےکہ بیڑے کے ہیں ناخدا غوث اعظم تمھیں دُکھ سنو اپنے آفت زدوں کاتمھیں درد کی دو دوا غوث اعظم بھنور میں پھنسا ہے ہمارا سفینہبچا غوث اعظم بچا غوث اعظم جو دکھ بھر رہا ہوں جو غم سہ رہا ہوںکہوں کس سے تیرے سوا غوث اعظم زمانے کے دُکھ درد کی رنج و غم کیترے ہ...

Parey Mujh Per Naa Kuch Aftaad Ya Ghous

پڑے مجھ پر نہ کچھ اُفتاد یا غوثمدد پر ہو تیری اِمداد یا غوث اُڑے تیری طرف بعد فنا خاکنہ ہو مٹی مری برباد یا غوث مرے دل میں بسیں جلوے تمہارےیہ ویرانہ بنے بغداد یا غوث نہ بھولوں بھول کر بھی یاد تیرینہ یاد آئے کسی کی یاد یا غوث مُرِیْدِیْ لَا تَخَفْ فرماتے آؤبَلاؤں میں ہے یہ ناشاد یا غوث گلے تک آ گیا سیلاب غم کاچلا میں آئیے فریاد یا غوث نشیمن سے اُڑا کر بھی نہ چھوڑاابھی ہے گھات میں صیاد یا غوث خمیدہ سر گرفتارِ قضا ہےکشیدہ خنجر جلاّد یا غوث اندھی...

Allah Bara e Ghous e Azam

اﷲ! برائے غوث الاعظمدے مجھ کو ولاے غوث الاعظم دیدارِ خدا تجھے مبارک اے محوِ لقاے غوث الاعظم وہ کون کریم صاحبِ جُود میں کون گداے غوث الاعظم سُوکھی ہوئی کھتیاں ہری کر اے ابرِ سخاے غوث الاعظم اُمیدیں نصیب، مشکلیں حل قربان عطاے غوث الاعظم کیا تیزیِ مہرِ حشر سے خوف ہیں زیرِ لواے غوث الاعظم وہ اور ہیں جن کو کہیے محتاج ہم تو ہیں گداے غوث الاعظم ہیں جانبِ نالۂ غریباں گوشِ شنواے غوث الاعظم کیوں ہم کو ستائے نارِ دوزخ کیوں رد ہو دعاے غوث الاعظم ...

Tera zara mah e Kamil Hai Ya Ghous

تِرا ذرّہ مہِ کامل ہے یا غوثتِرا قطرہ یمِ سائل ہے یا غوث کوئی سالک ہے یا واصل ہے یا غوث وہ کچھ بھی ہو تِرا سائل ہے یا غوث قدِ بے سایہ ظِلِّ کبریا ہے تو اُس بے سایہ ظل کا ظل ہے یا غوث تِری جاگیر میں ہے شرق تا غربقلمر و میں حرم تا حل ہے یا غوث دلِ عشق و رخِ حُسن آئینہ ہیںاور ان دونوں میں تیرا ظل ہے یا غوث تِری شمعِ دل آرا کی تب و تابگُل و بلبل کی آب و گِل ہے یا غوث تِرا مجنوں تِرا صحرا تِرا نجدتِری لیلیٰ تِرا محمل ہے یا غوث یہ تیری چمپئ رنگ...