Hanafi Scholars  

Muhammad Bin Ahmed Ayazi

           محمد بن احمد بن عباس [1] حسین عیاضی: سمر قند جلیل القدر اپنے شہر کے رؤسائے عطیم الشان میں سے تھے،باوجود حافظ علوم دینیہ اور عارف فنون مذہبیہ ہونے کے علوم حساب وزیچ و عمل اشدکال اقلیدس کے استاد زمانہ تھے۔کنیت ابو بکر تھی۔فقہ آپ نے ابی احمد محمد بن فقیہ اور ابو سلمہ اور صاحب کتاب جمل اصول الدین سے پڑھی اور آپ سےایک جم غفیر نے اخذ کیا۔صمیری کہتے ہیں کہ اسمٰعیل زاہد نے مجھ سے کہا کہ میں نے ...

Muhammad Bin Ahmed Ayazi

           محمد بن احمد بن عباس [1] حسین عیاضی: سمر قند جلیل القدر اپنے شہر کے رؤسائے عطیم الشان میں سے تھے،باوجود حافظ علوم دینیہ اور عارف فنون مذہبیہ ہونے کے علوم حساب وزیچ و عمل اشدکال اقلیدس کے استاد زمانہ تھے۔کنیت ابو بکر تھی۔فقہ آپ نے ابی احمد محمد بن فقیہ اور ابو سلمہ اور صاحب کتاب جمل اصول الدین سے پڑھی اور آپ سےایک جم غفیر نے اخذ کیا۔صمیری کہتے ہیں کہ اسمٰعیل زاہد نے مجھ سے کہا کہ میں نے ...

Muhammad Bin Sahal

                محمد بن سہل المعروف بہ تاجر: اپنے زمانہ کے امام کبیر فقیہ بے نظیر تھے، کنیت ابو عبد اللہ تھی۔مدت تک ابی العباس احمد بن ہارون فقیہ حنفی حاکم مزنی متوفی ۳۴۹؁ھ کی مجالس میں بیٹھے اور ان سے استفادہ کرتے رہے۔وفات آپ کی ۳۶۰؁ھ میں ہوئی۔ (حدائق الحنفیہ)...

Qazi Al haramain

          احمد بن محمد بن عبد اللہ نیشاپوری المعروف بہ قاضی الحرمین: اپنے زمانہ کے امام فاضل فقیہ کامل متفق علیہ شیخ حنفیہ تھے۔کنیت ابو الحسن تھی،علوم قاضی ابی طاہر محمد دباس شاگردابی خازم تلمیذ عیسٰی بن ابان اور نیز امام کرخی سے حاصل رہے اور اس عرصہ میں آپ نے موصل ورملہ اور حرمین کی قضا کی اور صرف حرمین میں تقریباً دس برس تک ٹھہرے رہے پھر نیشاپور میں آئے اور ۳۵۱؁ھ میں وفات پائی۔    &nbs...

Qazi Al haramain

          احمد بن محمد بن عبد اللہ نیشاپوری المعروف بہ قاضی الحرمین: اپنے زمانہ کے امام فاضل فقیہ کامل متفق علیہ شیخ حنفیہ تھے۔کنیت ابو الحسن تھی،علوم قاضی ابی طاہر محمد دباس شاگردابی خازم تلمیذ عیسٰی بن ابان اور نیز امام کرخی سے حاصل رہے اور اس عرصہ میں آپ نے موصل ورملہ اور حرمین کی قضا کی اور صرف حرمین میں تقریباً دس برس تک ٹھہرے رہے پھر نیشاپور میں آئے اور ۳۵۱؁ھ میں وفات پائی۔    &nbs...

Ali Bin Abu Jafar Tahtawi

                علی بن ابو جعفر طحطاوی: بڑے فقیہ محدث ،عالم فاضل،جامع فروع واصول اور امام طحطاوی کے خلف ارشد تھے،کنیت ابو الحسن تھی،بڑے بڑے محدثین مثل عبد الرحمٰن احمد بن شعیب نسائی وغیرہ سے حدیث کو سماعت کیا اور روایت کی اور ماہ ربیع الاول ۳۵۱؁ھ میں وفات پائی۔’’سالار جہاں‘‘ آپ کی تاریخ وفات ہے۔ (حدائق الحنفیہ)...

Ibrahim Bin Hussain Azri

           ابراہیم بن حسین [1] عزری: ابو اسحٰق کنیت تھی۔فقیہ فاضل محدث ثقہ تھے،ابا سعید عبد الرحمٰن بن حسن وغیرہ محدثین سے حدیث کو سماعت کیا اور آپ سے ابو عبد اللہ حاکم صاحب مستدرک نے روایت کی اور ۳۴۷؁ھ میں وفات پائی، عزری عزرہ کی طرف منسوب ہے جو شہر نیشاپور میں ایک محلہ کا نام ہے۔ ’’بدر عالم‘‘ آپ کی تاریخ وفات ہے۔   1۔ ابو الحسن ابراہیم بن حسن’’جواہر المفت...

Abu Ali Shashi

           احمد بن محمد بن اسحٰق شاشی: ابو علی کنیت تھی،شہر شاش میں جس کو اب تا شقند کہتے ہیں،پیدا ہوئے اور بغداد میں آکر امام ابی الحسن کرخی سے فقہ پرھی اور ایسے عالم فاضل تھے کہ امام کرخی آپ کے حق میں فرمایا کرتے تھے کہ ہمارے پاس ابو علی سے کوئی زیادہ حافظ نہیں آیا اس لئے جب امام کرخی فالج کی بیماری میں مبتلا ہوئے تو انہوں نے ابو بکر و مغانی کو تو فتویٰ دینے کا کام سپرد کیا اور آپ کو تدریس کی خا...

Ali Bin Muhammad

          علی بن  محمد داؤد بن ابراہیم تنوخی: امام کرخی کے اصحاب میں سے بڑے ذکی اور عارف علم کلام ونحو اور شعر و عربی میں مقدم اور اماما بو حنیفہ کے مذہب کے دقائق میں خوب ماہر اور علم لغت و ہیئت و عروض و ادب میں استاذ کامل تھے۔حافظ کا یہ حال تھا کہ آپ نے ایک دن رات میں سات سو شعر یاد کرلئے تھے اور سوائے قصائد شعرای  جاہلین و مخضر ین اور محدثین کے سات سو قصائد آپ کو باہر کے لوگوں کے یاد تھے۔آپ...

Ahmed Bin Muhammad Bin Hamid

                احمد بن محمد بن حامد طواویسی: فقیہ فاضل پر ہیزگار کامل زاہد ثقہ اور نیکوکار بندوں میں سے تھے،کنیت ابو بکر تھی۔ابو سعید ادریسی نے اپنی کتاب کمال میں آپ کی بڑی تعریف لکھی ہے علوم آپ نے محمد بن نصر مروزی اور محمد بن فضل بلخی سے پڑھے اور انہیں سے روایت کی،سمر قند میں ۳۴۴؁ھ میں حمام کے اندر فوت ہوئے۔طواویسی طرف طوایس کے م نسوب ہے،جو بخارا سے آٹھ فرسنگ کے فاصلہ پر،ایک شہر کا نا...