Mashaikh-e-Chishtiya  

Hazrat Sheikh Haji Ramazan Chishti Lahori

حضرت شیخ حاجی رمضان چشتی لاہوری رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ آپ خواجہ سلیمان تونسوی قدس سرہ کے مرید  ہیں بڑے زاہد ،عابد، صائم الدھر، اور قائم اللیل، ہیں۔ مخلوق سے دور اور اللہ کے قریب ہیں۔ ہمیشہ خانہ خدا میں قیام ہے اور عبادت میں مشغول ہیں۔ مجالس سماع میں پوری ذمہ داری سے شریک ہوتے ہیں اور وجد و اضطراب میں رہتے ہیں آپ حج بیت اللہ پر بھی گئے تھے خلق خدا سے نیک خلقی اور محبت سے پیش آئے ہیں جو ضرورت در پیش ہو اللہ سے دُعا کرتے ہیں جو قبول ہوجاتی ہے غر...

Hazrat Sheikh Muhammad Bin Fazlullah

 حضرت شیخ محمد بن فضل اللہ رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ آپ کے دادا کا نام شیخ محمد صدر ہے آپ کے بزرگوں کا نسب حضرت صدیق اکبر رضی اللہ عنہ تک پہنچتا ہے آپ کے بزرگ جون پور میں رہتے تھے مگر شہر گجرات میں پیدا ہوئے چھوٹے ہی تھے کہ والد کا انتقال ہوگیا نوجوانی میں حضرت شیخ گجراتی کی خدمت میں حاضر ہوئے اور خرقہ اجازت پایا مگر مکہ معظمہ چلے گئے وہاں بارہ سال مشائخ متقین کی خدمت میں رہے واپس ہندوستان آئے اور احمد آباد میں قیام کیا وہاں ہی آپ کی شادی ہوئی ش...

Hazrat Allama Molana Ghulam Rasool Hashim Chishti

حضرت علامہ مولانا غلام رسول ہاشم چشتی رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ مولانا غلام رسول بن خلیفہ پیر محمد ۳، مارچ ۱۸۶۳ء کو شکار پور سندھ میں تولد ہوئے ۔ آپ رئیس العارفین حضرت خواجہ امین شاہ چشتی ؒ کے بڑے خلیفہ مولانا حافظ صاحبڈ نہ چشتی کے پڑپوتے ( یعنی پوتے کے بیٹے ) تھے۔ تعلیم و تربیت : ابتدا میں محلہ کی مسجد شریف میں قرآن مجید کی تعلیم حاصل کی اس کے بعد حضرت مولانا قاضی سید بہادر علی شاہ چشتی ( جو کہ حضرت خواجہ سید محمد گیسودراز چشتی قدس سرہ متوفی ۸۲۵ھ...

Hazrat Shah Behram Chishti

حضرت شاہ بہرام چشتی رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ آپ شیخ جلال الدین پانی پتی قدس سرہ کے مریدان با صفا میں سے تھے علوم ظاہری اور اسرار حقیقت ازبر کرنے کے بعد خرقۂ خلافت ملا اور قصبہ برنادہ میں قیام پذیر ہوئے چونکہ قصبہ بیدولی دریائے جمنا کے کنارہ پر واقعہ ہے۔ اتفاقاً سیلابی موسم میں دریا کا رخ اس قصبہ کی طرف ہوگیا یہ قصبہ سیلاب کی زد میں آیا تو وہاں کے باشندے آپ کی خدمت میں حاضر ہوئے اس قصبے کے تمام لوگ حضرت شیخ جلال الدین پانی پتی رحمۃ اللہ علیہ کے مرید ...

Hazrat Syed Atiqullah Chishti

حضرت سید عتیق اللہ چشتی  رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ آپ جالندھر کے صحیح النسب سادات سے تھے ظاہری اور باطنی کمالات کے مالک تھے شاہ ابوالمعالی چشتی کی خدمت میں رہا کرتے تھے۔ ساری عمر عبادت و ریاضت میں گزار دی۔ آپ کی وفات ماہ شعبان ۱۱۳۱ھ میں ہوئی تھی۔ ز دنیائے دوں چو بفردوس رفت ز دنیائے دوں پیر پیران عتیق شہنشاہ عشق است تاریخ او ۱۱۳۱ھ دوبارہ بگو میر میراں عتیق ۱۱۳۱ھ...

آپ شیخ علاء الدین علاء الحق بنگالی قدس سرہ کے فرزند اور خلیفہ طریقت تھے۔ ہندوستان کے مشہور مشائخ میں مانے جاتے ہیں بڑے صاحب عشق و محبت اور ذوق و شوق کے مالک تھے۔ صاحب تصرف و کرامات تھے اپنے والد کی خدمت میں رہ کر بڑی روحانی منزلیں طے کیں اور درجہ قطبیت کو پہنچے اس طرح آپ قطب عالم کے خطاب سے مشہور ہوئے۔ اخبار الاخیار میں لکھا ہے کہ آپ اپنے والد کی خانقاہ کے تمام امور کو اپنے ہاتھ سے سرانجام دیا کرتے تھے کپڑے دھونا خانقاہ کو صاف کرنا۔ پانی  لا...