Ya Rab Too Hai Sab Ka Mola


یا ربّ تو ہے سب کا مولیٰ
سب سے اعلی سب سے اولیٰ

تیری ثنا ہو کس کی زباں سے
لائے بشر یہ بات کہاں سے

تیری اک اک بات نرالی
بات نرالی ذات نرالی

تیرا ثانی کوئی نہ پایا
ساتھی ساجھی کوئی نہ پایا

تو ہی دے اور تو ہی دلائے
تیرے دیے سے عالم پائے

تو ہی اوّل تو ہی آخر
تو ہی باطن تو ہی ظاہر

کیا کوئی تیرا بھید بتائے
تو وہ نہیں جو فہم میں آئے

پہلے نہ تھا کیا اب کچھ تو ہے
کوئی نہیں کچھ سب کچھ تو ہے

تو ہی ڈبوئے تو ہی اچھالے
تو ہی بگاڑے تو ہی سنبھالے

تجھ پر ذرّہ ذرّہ ظاہر
نیت ظاہر اِرادہ ظاہر

تجھ سے بھاگ کے جانا کیسا
کوئی اور ٹھکانا کیسا

تو ہی یاد دلا کے بھلائے
تو ہی بھلا کے یاد دلائے

تو ہی چھٹا دے تو ہی ملا دے
تو ہی گما دے تو ہی پتا دے

کوئی نہ تھا جب بھی تھا تو ہی
تھا تو ہی تو ہو گا تو ہی

تیرے دَر سے جو بھاگ کے جائیں
ہر پھر تیرے ہی دَر پر آئیں

تیری قدرت کا ہے نمونہ
نارِ خلیل و بادِ مسیحا

آٹھ پہر ہے لنگر جاری
سب ہیں تیرے دَر کے بھکاری

ذوقِ نعت


All Related

Comments