Paar Bera Lagaey Aal e Rasool

پار بیڑا لگائے آلِ رسول
ڈوبے بجرے تَرائے آلِ رسول

جو ہیں اپنے پرائے آلِ رسول
سب کو اپنا بنائے آلِ رسول

ٹھوکروں پہ نہ ڈال غیروں کی
ہم ہیں قدموں میں آئے آلِ رسول

تیرا باڑا ہے بٹ رہا جگ میں
تو ہی دے یا دلائے آلِ رسول

جھولی پھیلائے ہے تِرا منگتا
بھر دے داتا برائے آلِ رسول

دے دے چُمکار کر کوئی ٹکڑا
سگِ در کو رضائے آلِ رسول

در سے اپنے نہ کر اسے در در
در دے در کی رضائے آلِ رسول

دور دوری کا دور دورا ہو
دَور پھر یہ نہ آئے آلِ رسول

نِگھرے در بہ در بھٹکتے ہیں
دے ٹھکانہ برائے آلِ رسول

تلخیاں ساری دور ہو جائیں
مَئے شربت پلائے آلِ رسول

ہیں رضا، غوث کے قدم بہ قدم
ہیں قدم ان کے پائے آلِ رسول

جس نے پایہ تمھارا پایا ہے
کہہ اٹھا میں نے پائے آلِ رسول

اپنی قدموں کے نیچے ہے جنّت
اور قدم ہیں یہ پائے آلِ رسول

ان کی سیرت ہے سیرتِ نبوی
ان کی صورت لقائے آلِ رسول

ان کے جلووں میں ان کے جلوے ہیں
ہر ادا سے ادائے آلِ رسول

آتے دیکھیں جو اعلیٰ حضرت کو
آنکھیں کہہ دیں یہ آئے آلِ رسول

ہے بریلی میں آج مارہرہ
اعلیٰ حضرت ہے جائے آلِ رسول

قادریّوں کا ہے لگا میلہ
ہے تماشا ضیائے آلِ رسول

نوری مَسند پہ نوری پتلا ہے
اچھا ستھرا رضائے آلِ رسول

چتھر رحمت کا شامیانہ ہے
سر پہ ہے یا ردائے آلِ رسول

ہیں پروں سے کیے ہوئے سایہ
پرے قدسی جمائے آلِ رسول

ہیں گھٹا ٹوپ رحمتیں چھائیں
پا ہے ظلِّ ہُمائے آلِ رسول

غوث کا ہاتھ ہے مریدوں پر
بر زمیں کَالسَّمَاءِ آلِ رسول

بَرَکاتی برکات کا دولھا
شاہ احمد رضائے آلِ رسول

بَرَکاتی پیار کا سہرا
تیرے سر ہے رضائے آلِ رسول

قادریّت دُلھن بنی، نوشہ
شاہ احمد رضائے آلِ رسول

نور کا حُلّہ جوڑا شاہانہ
نوری جامہ عَبائے آلِ رسول

نور کی چہرے پر نچھاور ہے
صدقے ہم سب گدائے آلِ رسول

بیل میری بھی اب مَندھے چڑھ جائے
صدقہ حاؔمد رضائے آلِ رسول

بیاض پاک


All Related

Comments