Istighatha (asking for help)  

Shah e Barkaat Aey Abul Barakaat

شاہِ برکات اے ابو البرکات اے سلطانِ جود
بَارَکَ اللہ! اے مُبارک بادشا امداد کُن

عِشقیِ اے مقتولِ عشق اے خوں بہایت عینِ ذات
اے زِ جاں بِگزشتہ جاناں واصلا امداد کُن

بے خودا و با خدا آلِ محمد مصطفٰی
سیّدا حق واجدا یا مقتدا امداد کُن

اے حریمِ طیبۂ توحید را کوہِ اُحُد
یا جبل یا حمزہ یا شیرِ خُدا امداد کُن

اے سراپا چشم گشتہ در شہودِ عینِ ہو
زاں سبب کردند نامت عینیا امداد کُن

یا ابو الفضل آلِ احمد حضرتِ اچھے میاں
شاہ شمس الدین ضیاءُ الاصفیا امداد کُن

وَحی بر جَدِّ تو لَا یَأْتَل اُولُو الْفَضْل آمدہ است
بندۂ بے برگ را فضل و غنا امداد کُن

گو نہ ہجرت کردَم از اثم وغیٰ ارزم بقرب
آخر ایں در رانیم مسکیں گدا امداد کُن

اے کہ شمسی و کرامتہائے تو مثلِ نجوم
اے عجب ہم مِہر و ہم انجم نما امداد کُن

من سرت کردم دمے دیگر زِ شرقِ خَرق تاب
آفتابا! در شبِ داجِم بِیا امداد کُن

تاجْدار حضرت ماہرہ یا آلِ رسول
اے خدا خواہ و جدا از مَا عَدا امداد کُن

اے شہِ والا عمیم آلا عظیم المرتبہ
اے پئے اِلّا ذبیحِ تیغِ لا امداد کُن

نائلِ جود از نَمے زاں یم مَرا سیراب ساز
نو گُلِ جود از شَمے جانم فَزا امداد کُن

اے عجب غیبے ترا مشہود از غیبِ شُہود
دیدہ از خود بستی و دیدی خدا امداد کُن

حدائقِ بخشش

...

Istighasa Written By Alahazrat

بندہ ام وَالْاَمْرُ اَمْرُک آنچہ دانی کن بمن
من نمی گویم مرا بِگزار یا امداد کُن

خانہ زادانِ کریماں گر بشدّت می زَنید
ایں مَن و اِینک سرم ورنَے مرا امداد کُن

دستِ من بگر فتی و برتست پاسش بعد ازیں
یا تو دانی یا ہماں دستِ تو یا امداد کُن

گر بَدوزخ می رَوَم آخر ہمی گویند خَلق
کاں رسولی می رَوَد غیرت بَرا امداد کُن

عار باشد بر شَبانِ دِہ اگر ضائع شَوَد
یک رَسن در دشت یا حَامِی الْحُمٰی امداد کُن

حدائقِ بخشش

...

Mustafa Khairul Wara Ho

مصطفیٰ خیرُ الوریٰ ہو
سَرورِ ہر دو سَرا ہو

اپنے اچھوں کا تَصَدُّق
ہم بدوں کو بھی نباہو

کس کے پھر ہوکر رہیں ہم
گر تمھیں ہم کو نہ چاہو

بَد ہنسیں تم اُن کی خاطر
رات بھر رو و کراہو

بد کریں ہر دم بُرائی
تم کہو اُن کا بھلا ہو

ہم وہی ناشستہ رُو ہیں
تم وہی بحرِ عطا ہو

ہم وہی شایانِ رد ہیں
تم وہی شانِ سخا ہو

ہم وہی بے شرم و بد ہیں
تم وہی کانِ حیا ہو

ہم وہی ننگِ جفا ہیں
تم وہی جانِ وفا ہو

ہم وہی قابل سزا کے
تم وہی رحمِ خدا ہو

چرخ بدلے دہر بدلے
تم بدلنے سے ورا ہو

اب ہمیں ہوں سہو حاشا
ایسی بھولوں سے جُدا ہو

عمر بھر تو یاد رکھا
وقت پر کیا بھولنا ہو

وقتِ پیدائش نہ بھولے
کَیْفَ نَیْسٰی کیوں قضا ہو

یہ بھی مولیٰ عرض کر دوں
بھول اگر جاؤ تو کیا ہو

وہ ہو جو تم پر گراں ہے
وہ ہو جو ہر گز نہ چاہو

وہ ہو جس کا نام لیتے
دشمنوں کا دل بُرا ہو

وہ ہو جس کے رد کی خاطر
رات دن وقفِ دُعا ہو

مر مٹیں برباد بندے
خانہ آباد آگ کا ہو

شاد ہو ابلیسِ ملعوں
غم کسے اِس قہر کا ہو

تم کو ہو وَاللہ! تم کو
جان و دل تم پر فدا ہو

تم کو غم سے حق بچائے
غم عَدُوّ کو جاں گَزا ہو

تم سے غم کو کیا تعلّق
بے کسوں کے غم زِدا ہو

حق دُرودیں تم پہ بھیجے
تم مُدام اُس کو سراہو

وہ عطا دے تم عطا لو
وہ وہی چاہے جو چاہو

بر تو او پاشَد تو بر ما
تا ابد یہ سلسلہ ہو

کیوں رضؔا مشکل سے ڈریے
جب نبی مشکل کُشا ہو

حدائقِ بخشش

...

Bakar e Haish Haranam Aghisni Ya Rasool Allah

بکار خویش حیرانم اغثنی یا رسول اللہ
پریشانم پریشانم اغثنی یا رسول اللہ

ندارم جز تو ملجائے ندانم جز تو ماوائے
توئی خود سازو سا مانم اغثنی یا رسول اللہ

شہا بیکس نوازی کن طبیبا چارہ سازی کن
مریض دردِ عصیانم اغثنی یا رسول اللہ

نرفتم راہ بینا یاں فتادم درچہِ عصیاں
بیا اے حبل رحما نم اغثنی یا رسول اللہ

گنہ بر سر بلا بارد دِلم دردِ ہوا دارد
کہ داند جز تو در مانم اغثنی یا رسول اللہ

گنہ بر سر بلا بارد دلم دردِ ہوا دارد
کہ داند جز تو در مانم اغثنی یا رسول اللہ

اگر رانی وگر خوانی غلامم انت سُلطانی
دگر چیزے نمیدانم اغثنی یا رسول اللہ

بکہف رحمتم پرور زقطمیرم منہ کم تر
سگِ درگاہِ سلطانم اغثنی یا رسول اللہ

گنہ درجانم آرتش زد قیامت شعلہ می خیزد
مدد اے آب حیو انم اغثنی یا رسول اللہ

چو مرگم نخل جاں سوزد بہارم راخزاں سوزد
نہ ریزد برگ ایمانم اغثنی یا رسول اللہ

چو محشر فتنہ انگیزد بلائے بے اماں خیزد
بجویم از تو در مانم اغثنی یا رسول اللہ

پدر رانفرتے آید پسر راوحشت افزاید
توگیری زیر دامانم اغثنی یا رسول اللہ

عزیزاں گشتہ دور ازمن ہمہ یاراں نفورا زمن
دریں وحشت ترا خوانم اغثنی یا رسول اللہ

گدائے آمد اے سلطان بامید کرم نالاں
تہی داماں مگر دانم اغثنی یا رسول اللہ

اگرمی رانیم از در بمن بنمادرے دیگر
کجا نالم کِرا خوانم اغثنی یا رسول اللہ

گرفتارم رہائی دِہ مسیحا مومیائی دِہ
شکستم رنگ سامانم اغثنی یا رسول اللہ

رضؔایت سائل بے پر توئی سلطان لَاتَنْہَرْ
شہا بہرے ازیں خوانم اغثنی یا رسول اللہ

حدائق ِ بخشش

...