Zia-e-Miracles  

Sozish Aur Jalan Dur Hogai

سوزش اور جلن دور ہوگئی  غیر مسلم بھی آپ کی کرامات کے قائل تھے چنانچہ بہت سے غیر مسلم بھی آپ کے درِ اقدس پر حاضر ہوکر اپنی پریشانی دورکرنے کی درخواست کرتے تھے ایک مرتبہ ایک ہندو آپ کی خدمت میں حاضر ہوا جس کے جسم پر برسوں سے جلن اور سوزش کا عارضہ تھا اور کسی بھی طرح اس کو افاقہ نہ ہوتا تھا جسم پر جلن ہوتے رہنے کی وجہ سے کافور ملتا رہتا تھا تاکہ اسے کچھ سکون مل جائے مگر پھر بھی اس کی بے چینی ختم نہ ہوتی تھی اُس کو یوں محسوس ہوتا تھا کہ جیسے اس ...

Saved From Death

قتل ہونے سے بچالیا آپ کے ایک مرید حضرت میاں صاحب مظہر جمال بیان کرتے ہیں کہ میں فوج میں ملازمت کرتا تھا اور جس دِن حضرت شاہ بلاول رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ کے مزار مبارک کے متصل مقام پر شیر سنگھ کو قتل کیا گیا تو اتفاق سے وہاں پر میں اور میرا ایک ساتھی موجود تھے موقع و اردات پر ہم اس قدر ڈرے کہ خوفزدہ ہوکر زینہ کے راستے اوپر چڑھے گئے اچانک میں نے دیکھا کہ ہمارے تعاقب میں دو افراد برہنہ تلواریں لے کر دوڑتے ہوئے آرہے ہیں اب ہمارے لیے بھاگنے کا کوئی راس...

Camel Was Right

اونٹ تندرست ہوگیا  آپ کی ایک کرامت کا ذکر کرتے ہوئے حضرت مولانا عبد الرحیم کلانوری فرماتے ہیں کہ ایک مرتبہ آپ کی خدمت میں ایک اونٹ والا حاضر ہوا اور عرض کی کہ میرا اونٹ اچانک شدید بیمار ہوگیا ہے اور اس کی بیماری کسی طرح ٹھیک نہیں ہو رہی میں غریب آدمی ہوں اور یہ اونٹ میری روزی کا ذریعہ و وسیلہ ہے آپ نے اونٹ والے کی طرف دیکھا اور فرمایا، تیرا اونٹ تو بالکل ٹھیک ہے۔ اُس نے عرض کی حضور! اگر میرا اونٹ ٹھیک ہوتا تو مَیں کیوں آپ کو تکلیف دیتا آپ نے...

Gumshuda Bacha Ki Wapsi

 حضرت خواجہ معین الدین نے ایک اور واقعہ بیان کیا ہے کہ ایک شخص حضرت خواجہ عثمان رحمۃ اللہ علیہ کی خدمت میں حاضر ہوا اور عرض کی کہ اتنا عرصہ ہوا کہ میرا لڑکا گم ہوگیا ہے مجھے کوئی خبر نہیں کہ وہ کہاں ہے مہربانی فرماکر توجہ فرمائیں، حضرت خواجہ نے یہ بات سنی اور مراقبے میں چلے گئے، تھوڑی دیر بعد سر اٹھایا اور فرمایا کہ تمہارا لڑکا گھر پہنچ گیا ہے، وہ شخص گھر گیا لڑکے کو گھر پر موجود پایا وہ خوشی میں لڑکے کو ساتھ لے کر اُسی وقت حضرت خواجہ کی خدم...

Asman Se Dastar Khan Ka Nuzool

ایک دن آدھی رات کے وقت شہر کے جاہل آدمی ایک مجلس میں بیٹھے ہوئے تھے اور خواجہ عثمان ہارونی کی کرامت کا ذکر کر رہے تھے۔ سب یہ کہنے لگے کہ ہم ابھی خواجہ عثمان رحمۃ اللہ علیہ کی خدمت میں جاتے ہیں اور کسی کرامت کا مطالبہ کرتے ہیں اگر انہوں نے کرامت دکھادی تو ہم مرید ہوجائیں گے چلتے وقت ہر ایک نے علیحدہ علیحدہ کھانے کی خواہش دل میں رکھی جو رات کےو قت تیار نہ  ہوسکے۔ حضرت خواجہ کی مجلس میں جا پہنچے آپ نے انہیں دیکھ کر فرمایا اللہ تعالیٰ جسے چاہتا ...

Sama Ke Bare Mein Badsha Ka Ullama Ke Zariye Muqabala

ایک بار بادشاہِ وقت نے حضرت خواجہ کو سماع سننے سے منع کردیا بلکہ شہر کے تمام قوالوں کو حکم دیا کہ اگر کوئی قوال کسی مجلس میں سماع کرے گا، اسے قتل کردیا جائے گا، حضرت خواجہ نے بادشاہ کو کہا کہ سماع ایسی چیز ہے جو ہمارے پیروں کی سنت ہے ہمیں سماع سے کوئی نہیں روک سکتا۔ سلطان نے کہا کہ پہلے سماع کے جواز میں علماء کرام کے ساتھ مناظرہ کریں، پھر دیکھا جائے گا، چنانچہ شہر کے علماء کی ایک مجلس برپا کی گئی جس میں بادشاہ بھی شریک ہوا، حضرت خواجہ اُس محفل می...

Bagher Kashti Ke Dariya

خواجہ معین الدین اجمیری رحمۃ اللہ علیہ نے فرمایا کہ ایک دن اپنے پیر و مرشد خواجہ عثمان ہارونی کے ہمرقاب ہوکر دریا کے کنارے پہنچا۔ اتفاقاً اس وقت کوئی کشتی نہ تھی۔ حضرت خواجہ نے مجھے فرمایا کہ آنکھیں بند کرو۔ پھر ایک لحظے کے بعد فرمایا کہ اب کھول لو، جب میں نے آنکھیں کھولیں میں اور حضرت خواجہ دریا کے دوسرے کنارے کھڑے تھے۔...

Ap Ke Waz Mein Taseer

آپ کے وعظ میں تأثیر  حضرت سری سقطی رضی اللہ تعالیٰ عنہ ایک مرتبہ بغداد شریف میں تقریر فرمارہے تھے کہ خلیفہ بغداد کا ایک مصاحب احمد بن یزید بڑے ہی کروفر سے حاضر ہوا اور آپ کی تقریر سننے کے لیے بیٹھ گیا اس وقت آپ یہ ارشاد فرمارہے تھے کہ تمام مخلوقات میں انسان سے زیادہ ضعیف کوئی مخلوق نہیں مگر باوجود اس قدر ضعف کے گناہ کرنے میں کتنا جری اور بہادر بنتا ہے افسوس ، صد افسوس۔ آپ کے ان فقروں کا احمد بن یزید کے دل پر خاص اثر ہوا۔ اور تقریر ختم ہو...

Pari kamon Ki Tarah Pigal Jana

پری کاموم کی طرح پگھل جانا  حضرت جنید بغدادی رضی اللہ تعالیٰ عنہ ارشاد فرماتے ہیں کہ میں حضرت سری سقطی رضی اللہ تعالیٰ عنہ کی خدمت میں حاضرہوا تو آپ کے حال کو متغیر پایا۔ دریافت کیا کہ حضور! کیا ہوا ہے؟ تو آپ نے ارشاد فرمایا کہ پریوں میں سے ایک جوان پری میرے پاس آئی اور مجھ سے سوال کیا کہ حیا کس کو کہتے ہیں؟ میں نے جواب دیا تو وہ سنتے ہیں موم کی طرح پگھل کر پانی ہوگئی۔ یہاں تک کہ میں نے اس پانی کو بھی دیکھا جو پری کے جسم کا تھا....

Sharabi Ko Namazi Banadiya

شرابی کو نمازی بنا دیا آپ رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ نے ایک مرتبہ ایک شرابی کو دیکھا جو نشے کی حالت میں مدہوش زمین پر گرا ہو ا تھااور اسی نشے کی حالت میں اللہ ،اللہ کہہ رہا تھا ۔ آپ نے اس کا منہ پانی سے صاف کیا اور فرمایا کہ اس بے خبر کو کیا خبر کہ ناپاک منہ سے کس ذات کا نام لے رہا ہے ؟آپ کے جانے کے بعد جب شرابی ہوش میں آیا تو لوگوں نے اس کو بتایا کہ تمہاری بے ہو شی کی حالت میں تمہارے پاس حضرت سری سقطی علیہ رحمۃ اللہ القوی تشریف لائے تھے اور تمہارامنہ...