Saraya(battles)  

سرکارِ دو عالم ﷺ کو خبر ملی کہ بنو فزارہ اور بنو عذرہ و بنو غطفان مسلمانوں کے خلاف بہت بڑی فوج کے ساتھ مقام عذرہ پر جمع ہورہے ہیں۔رسو ل اللہ ﷺ نے حضرت بشیر بن کعب انصاری رضی اللہ تعالیٰ عنہ کو تین سو (۳۰۰)سواروں کے ہمراہ اس مقام کی طرف روانہ فرمایا تاکہ دشمنوں پر اچانک حملہ آور ہوکر ان کی طاقت کو منتشر کردیں اور یوں کفار کی طرف سے مدینہ منورہ پر حملہ کا خطرہ نہ رہے ۔ مجاہد مدینہ منورہ سے رات کے وقت روانہ ہوئے۔ حضرت بشیر بن کعب انصاری رضی اللہ تع...

سریہ حضرت زید بن حارثہ رضی اللہ تعالیٰ عنہ (اُمِّ قرفہ) رمضان المبارک 6ہجری اسی سال حضرت ابو بکر صدیق رضی اللہ تعالیٰ عنہ یا حضرت زید بن حارثہ رضی اللہ تعالیٰ عنہ کو سرکارِ دو عالم صلی اللہ تعالیٰ علیہ والہ وسلم نے امّ قرفہ فاطمہ بنت ربیعہ بن زید فزاریہ کی طرف روانہ کیا۔ یہ عورت ام القری کے گرد و نواح میں رہائش پذیر تھی۔ یہ مقام مدینہ منورہ سے سات منزل کے فاصلہ پر ہے۔ وادی القریٰ کا اہم مقام العلاء ہے کسی زمانے میں قرح وا...

سرکارِ دو عالم صلی اللہ تعالیٰ علیہ والہ وسلم نے حضرت عبد اللہ لیثی رضی اللہ تعالیٰ عنہ کو دو سو تیس (۲۳۰) پیادہ مجاہدین کا سردار بناکر بنو عوال اور بنو عبد ثعلبہ کی تادیب کے لئے اور اکثر روایات میں قبیلہ جہینہ کی ایک شاخ حرقات کی تادیب کے لیے روانہ کیا یہ قبیلہ جہینہ کی شاخ مدینہ منورہ سے 98 میل کے فاصلے پر رہائش پذیر تھی۔(مدینہ منورہ سے مقام میفعہ کافاصلہ بطن نخل سے نجد کی جانب تقریبا98 میل ہے)۔ حضرت عبد اللہ لیثی رضی اللہ تعالیٰ عنہ نے اپنے ...