ضیائے صحابیات  

(سیّدہ )اُمیمہ( رضی اللہ عنہا)

(سیّدہ )اُمیمہ( رضی اللہ عنہا) اُمیمہ،ابو ہریرہ کی والدہ، ابو موسیٰ نے جن روایات کی مجھے اجازت دی،ان میں ذکر کیا، کہ ابو علی نے ابو نعیم سے،انہوں نے سلیمان بن احمد سے ،انہوں نے محمد بن اسحاق بن شاذان سے،انہوں نے اپنے والد سے انہوں نے سعد بن الصلت سے ،انہوں نے یحییٰ بن علاء سے،انہوں نے ایوب سختیانی سے، انہوں نے محمد بن سیرین سے،انہوں نے ابو ہریرہ سے روایت کی کہ حضرت  عمر نے انہیں بُلا بھیجا ،تا کہ انہیں کسی علاقے کی حکومت عطا کریں،لیکن انہوں ...

(سیّدہ )زینب ( رضی اللہ عنہا)

(سیّدہ )زینب ( رضی اللہ عنہا) زینب دختر خزیمہ بن حارث بن عبداللہ بن عمرو بن عبد مناف بن ہلال بن عامر بن صعصعہ ہلالیہ،یہ خاتون بھی حضوراکرم صلی اللہ علیہ وسلم کی زوجہ تھیں،چونکہ وہ مساکین اور ناداروں کا خاص خیال رکھتی تھیں،اس لئے ام المساکین کے لقب سے مشہور تھیں،اوّلاً عبداللہ بن حجش کی زوجہ تھیں،جب وہ معرکۂ احد میں شہید ہو گئے تو حضورِاکرم کی زوجیت میں آگئیں،ایک روایت کے مطابق وہ پہلے طفیل بن حارث بن مطلب کے نکاح میں تھیں،بعد میں ان کے بھائی عب...

(سیّدہ )زینب ( رضی اللہ عنہا)

(سیّدہ )زینب ( رضی اللہ عنہا) زینب دختر علی بن ابی طالب قرشیہ ہاشمیہ ، ان کی والدہ جناب خاتونِ جنت تھیں،حضور اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کی زندگی میں پیدا ہوئیں،آپ کی وفات کے بعد خاتون جنّت کے اورکوئی اولاد نہ ہوئی،جناب زینب بڑی عقل مند،ذی فہم اور کریم النفس خاتون تھیں،حضرت علی کے برادرِاکبر جعفرطیار کے بیٹے عبداللہ سے بیاہی گئیں،اور ان کے بطن سے علی،عون،اکبر ،عباس،محمد اور ام کلثوم صاحبزادی پیدا ہوئیں،کربلا میں حضرت امام حسین رضی اللہ عنہ کے ساتھ ت...

(سیّدہ)سمیہ(رضی اللہ عنہا)

(سیّدہ)سمیہ(رضی اللہ عنہا) سمیہ (ام عماربن یاسر) دختر خباط،یہ خاتون ابو حذیفہ بن مغیرہ کی لونڈی تھیں،اور یاسر ابوحذیفہ کے حلیف تھے،اس لئے ابو حذیفہ نے انہیں سمیہ سے بیاہ دیا،جب عمار پیداہوئے،تو ابو حذیفہ نے انہیں آزاد کردیا،عمار سابقین فی الاسلام میں سے تھے،اور بروایتے ان کا نمبر ساتواں تھا،اور یہ ان لوگوں میں ہیں،جنہیں اسلام کے لئے سخت تکلیفیں برداشت کرنا پڑیں۔ ابو جعفر نے باسنادہ یونس سے انہوں نے ابن اسحاق سے روایت کی کہ انہیں خاندان عمار کے ک...

(سیّدہ )عمارہ(رضی اللہ عنہا)

(سیّدہ )عمارہ(رضی اللہ عنہا) عمارہ دختر حمزہ بن عبدالمطلب قرشیہ ہاشمیہ ،حضورِاکرم کے چچا کی بیٹی تھیں،واقدی نے امِ حبیبہ سے انہوں نے داؤد بن حصین سے ،انہوں نے عکرمہ سے،انہوں نے ابنِ عباس سے روایت کی کہ عمارہ اور ان کی والدہ سلمیٰ دختر عمیس مکے میں تھیں کہ حضورِ اکرم صلی اللہ علیہ وآلہٖ وسلم عمرہ قضیہ ادا کرنے  مکے آئے،حضرت علی کرم اللہ وجہہ نے رسولِ کریم سے ذکر کیا،اور فرمایا،ہم کیوں اپنے چچا کی لڑکی کو مشرکین کے رحم وکرم پر چھوڑکر جائیں،ح...

(سیّدہ )عمرہ اشہلیہ(رضی اللہ عنہا)

(سیّدہ )عمرہ اشہلیہ(رضی اللہ عنہا) عمرہ اشہلیہ،ان کا نسب معلو م نہیں،ان سے مروی ہے کہ حضورِاکرم ان کے محلے میں تشریف لے گئے اور وہاں ظہر اورعصرکی نمازیں ادا فرمائیں،جب سورج غروب ہوا،اور مؤذن نے اذان کہی تو افطار کے لئے بکری کا کندھا اور بازو بھون کر لائے گئے،آپ نے دانتوں سے کاٹ کر کھاناشروع کیا، بعدہٗ مؤذن نے اقامت کہی،آپ نے کپڑے کے ٹکڑے سے ہاتھ پونچھے،اٹھے اور نماز پڑھی اور پانی کو ہاتھ بھی نہ لگایا،ابن مندہ اور ابونعیم نے ذکر کیا ہے۔ (اسد ا...

(سیّدہ )ملیکہ( رضی اللہ عنہا)

(سیّدہ )ملیکہ( رضی اللہ عنہا) کےملیکہ دختر خارجہ بن سنان بن ابی حارثہ بن مرہ بن عوف بن سعد بن ذبیان بن بغیض بن ریث بن غطفان بن سعد بن قیس عیلان المریہ،ابن جریج نے عکرمہ سے روایت کی،کہ اسلام نے چار عورتوں اور ان کے چار سوتیلے بیٹون کے درمیان علیحدگی کردی تھی،ان میں سے ایک ملیکہ دختر خارجہ تھیں، جوزبان بن سیار بن عمرو بن جابر بن عقیل بن ہلال بن سمی بن مازن بن فزارہ فزاری کی زوجہ تھیں اور زبان کی وفات کے بعد منظور بن زبان نے سوتیلی ماں کو بیوی بنالی...