ضیائے صحابیات  

(سیّدہ )میمونہ( رضی اللہ عنہا)

میمونہ دختر ابوعتبہ یا عنبسہ،یہ ابن مندہ اور ابوعمرکا قول ہے،ابو نعیم کے مطابق یہ لفظ عُیَب کی تصحیف ہے،منتجع بن مصعب ابوعبداللہ العبدی نے ربعیہ دختر مرثد سے داوروہ بنو فریع کے پاس ٹھہراکرتی تھیں،انہوں نے منبہ سے،انہوں نے میمونہ دختر عُیَب سے(ایک روایت میں دختر ابی عنبسہ آیا ہے) جو حضور نبیِ کریم رؤف رحیم کی آزاد کردہ کنیز تھیں،روایت کی،کہ ایک خاتون حضرت عائشہ کے پا س آئی،اور کہا اے عائشہ حضورِاکرم سے میرے بارے م...

(سیّدہ )میمونہ( رضی اللہ عنہا)

میمونہ دختر کردم ثقفیہ،ان سے یزید بن مقسم نے روایت کی،ابویاسر نے باسنادہ عبداللہ سے انہوں نے اپنے والدسے،انہوں نے یزید بن ہارون سے،انہوں نے عبداللہ بن یزید بن مقسم بن ضبتہ الطائفی سے روایت کی،کہ انہوں نے اپنی پھوپھی سارہ دختر مقسم سے،انہوں نے میمونہ دختر کردم سے سُناکہ انہوں نے رسولِ اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کو مکے میں دیکھا،آپ اُونٹنی پر سوار تھے،اور میں اپنے والد کے ساتھ تھی،حضورِ اکرم کے ہاتھ میں کتاب کی طرح ایک د...

(سیّدہ )میمونہ( رضی اللہ عنہا)

میمونہ دختر صبیح اور ایک روایت میں صفیح بن حارث سے،یہ خاتون ابوہریرہ کی والدہ تھی،طبرانی ان کا نام لکھا ہےلیکن اس حدیث میں جو ہم نے امیمہ کے ترجمے میں لکھی ہے،ان کانام مذکور نہیں، ابومحمد بن قتیبہ نے لِکھا ہے کہ سعید بن صفیح سخت آدمیوں میں سے تھا۔ عبدالوہاب بن ابی حبہ نے باسنادہ عبداللہ بن احمد سے ،انہوں نے اپنے والد سے،انہوں نے عبدالرحمٰن سے ،انہوں نے عکرمہ بن عمار سے،انہوں نے ابوکثیر سے،انہوں ...

(سیّدہ )جمانہ( رضی اللہ عنہا)

جمانہ دختر ابو طالب،حضور نے انہیں خیبر کی پیداوار سے تیس وسق غلّہ عطافرمایا تھا،اسے عما ر نے سلمہ سے،انہوں نے ابن اسحاق سے روایت کیا،ابو احمد عسکری نے عبداللہ بن سفیان حارث کے ترجمے میں لکھا ہے کہ ان کی والدہ جمانہ دختر ابو طالب تھیں،اور یہ وہی صاحب ہیں،جنہوں نے امامہ دختر زینب سے نکاح کیا تھا،لیکن صحیح روایت یہ ہے کہ حضورِ اکرم کی نواسی امامہ کی شادی مغیرہ بن نوفل بن حارث سے ہوئی تھی،جو عبداللہ بن سفیان کے چچا تھے،اور بقولِ زبیر بن بکار یہ جمانہ...

(سیّدہ )میمونہ( رضی اللہ عنہا)

میمونہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کی آزاد کردہ کنیز،ان سے حضرت علی کرم اللہ وجہ اور زیاد بن ابو سودہ نے روایت کی،ابو نعیم کے نزدیک میمونہ سعد کی دختر تھیں،اورابنِ مندہ نےان کا علیحدہ ذکرکیا ہے۔ معاویہ بن صالح نے زیاد بن ابوسودہ سے،انہوں نے میمونہ سے روایت کی کہ انہوں نے حضور ِاکرم صلی اللہ علیہ وسلم سے بیت المقدس کے بارے میں دریافت کیا،فرمایا،یہ وہ مقام ہے،جہاں حشر نشر بپا ہوگا اس لئے وہاں جاؤ...

(سیّدہ )میمونہ( رضی اللہ عنہا)

میمونہ دختر سعد جو حضورِ اکرم کی خدمت گزار تھی،ان کی حدیث کو ایوب بن خالد اور ہلال بن ابی ہلال نے روایت کیا ہے،اسماعیل بن علی وغیرہ نے باسنادہم محمد بن عیسیٰ سے،انہوں نے علی بن خشرم سے،انہوں نے عیسیٰ بن یونس سے ،انہوں نے موسیٰ بن عبیدہ سے،انہوں نے ایوب خالد سے،انہوں نے میمونہ دختر سعد سے روایت کی،حضورِ اکرم نے فرمایا،جو آدمی اپنے لباس میں غیر مناسب طور پر اپنی ازارکوزمین پر لٹکاتا ہے،اس کی مثال قیامت کے اس اندھیرے ...

(سیّدہ )میمونہ( رضی اللہ عنہا)

میمونہ غیر منسوبہ،ان سے آمنہ دختر عمر نے روایت کی،ابو نعیم کہتے ہیں،ابن مندہ نے ان کا ذکر نہیں کیا،اور سلیمان بن احمد نے انہیں میمونہ بن سعد کے ترجمے میں ذکرکیا ہے۔ یحییٰ بن ابوالرجاء نے اذناً باسنادہ ابوبکر بن ابی عاصم سے،انہوں نے علی بن میمون ابوالحسن عطار سے، انہوں نے میمونہ سے روایت کی،انہوں نے حضورِاکرم سے پوچھا،یارسول اللہ! ہمیں صدقے کے بارے میں کچھ بتایئے،آپ نے فرمایا،صدقہ جہنم کی آگ سے پناہ ہے،اگر تو اسے اللہ کی رضا...

(سیّدہ )مجنہ( رضی اللہ عنہا)

مجنہ حبش،مسجد میں مقیم تھیں،حضورِاکرم کے عہد میں وفات پائی،یحییٰ بن ابی انیسہ نے علقمہ بن مرثد سے،انہوں نے ایک مدنی سے روایت کی،کہ ایک مدنی خاتون مسجد میں مقیم تھیں،کہ آپ ان کی خبر گیری فرماتے تھے،کچھ دن وہ غائب رہی،تو آپ نے دریافت فرمایا،صحابہ نے گزارش کی کہ وہ وفات پاگئی ہے،فرمایا،مجھے کیوں نہیں بتلایا،چنانچہ آپ نے اس کی قبر پر نماز جنازہ ادا کی۔ اس حدیث کو یحییٰ بن ابی انیسہ نے زہری سے ،انہوں نے ابوامامہ بن سہل سے ،انہوں...