سند الکاملین حضرت سید شاہ آل برکات ستھرے میاں برکاتی قادری مارہروی

سند الکاملین حضرت سید شاہ آل برکات ستھرے میاں برکاتی قادری مارہروی رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ

 

ولادتِ باسعادت:

 حضرت ستھرے میاں کی پیدائش 10؍ رجب المرجب 1163ھ کو ہوئی۔

والد ماجد:

اسد العارفین حضرت سید شاہ حمزہ عینیؔ رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ

شادیاں :

آپ نے دو  شادیاں کیں، ایک سید محمد احسن صاحب کی صاحبزادی سے اور دوسری شادی آپ نے قصبہ باڑی میں قاضی سید غلام شاہ حسین صاحب کی صاحبزادی فضل فاطمہ سے کی۔

تقوی :

آپ کو مسجد میں نماز پڑھنے اور یاد الٰہی کا بہت شوق تھا۔ مارہرہ شریف میں رہتے ہوئے سخت بیماری کے سبب صرف تین روز آپ مسجد میں نہ جاسکے جس کا عمر بھر قلق رہا۔

شاعر  سے شغف:

آپ شاعر  بھی تھے اور ’’آشفتہ‘‘ تخلص رکھتے تھے۔

اولاد و امجاد:

آپ کے چارصاحبزادے ہیں: (۱)حضرت سید شاہ آل امام جما میاں قدس سرہٗ (۲)حضرت سید شاہ آل رسول قدس سرہٗ (۳)حضرت سید شاہ اولاد رسول قدس سرہٗ (۴)حضرت سید شاہ غلام محی الدین قدس سرہٗ۔

تاریخ وصال:

آپ نے 26؍ رمضان المبارک بروز سنیچر(ہفتہ) 1251ھ کو  بوقتِ ظہر داعیٔ اجل کو لبیک کہا۔

مشہور خلفاء :

 (۱) حضرت سید شاہ آل رسول احمدی (۲)حضرت سید شاہ اولاد رسول (۳) حضرت سید شاہ غلام محی الدین امیر عالم اور (۴) حضرت حافظ نصیر الدین علیہم الرحمہ و الرضوان۔

 خاص کارنامہ :

جواب: آپ کو تعمیرات کا بہت شوق تھا، عبادت و ریاضت سے جو بھی وقت ملتا تھا درگاہ وہ خانقاہ کی تعمیر کے لیے وقف فرماتے تھے۔ در گاہ شریف میں جامع مسجد کی تعمیر جس کا سن تأسیس 1217ھ ہے یہ مسجد اب بھی خانقاہ برکاتیہ میں موجود ہے۔

 

بہ شکریہ : البرکات اسلامک ریسرچ اینڈ ٹریننگ انسٹی ٹیوٹ، انوپ شہر روڈ،علی گڑھ

دعاؤں کا طالب : محمد حسین مُشاہد رضوی

مزید

تجویزوآراء