منظومات  

خواجۂ ہند وہ دربار ہے اعلیٰ تیرا

خواجۂ ہند وہ دربار ہے اعلیٰ تیراکبھی محروم نہیں مانگنے والا تیرا مئے سر جوش در آغوش ہے شیشہ تیرابے خودی چھائے نہ کیوں پی کے پیالہ تیرا خفتگانِ شبِ غفلت کو جگا دیتا ہےسالہا سال وہ راتوں کا نہ سونا تیرا ہے تری ذات عجب بحرِ حقیقت پیارےکسی تیراک نے پایا نہ کنارا تیرا جورِ پامالیِ عالم سے اُسے کیا مطلبخاک میں مل نہیں سکتا کبھی ذرّہ تیرا کس قدر جوشِ تحیّر کے عیاں ہیں آثارنظر آیا مگر آئینے کو تلوا تیرا گلشن ہند ہے شاداب کلیجے ٹھنڈےواہ اے ابر...

منقبت خواجہ غریب نواز

منقبت خواجہ غریب نواز سرکار کرم کے صدقہ میں خواجہ کا روضہ دیکھ لیا خواجہ کی غریب نوازی کا دربار میں نقشہ دیکھ لیا سرکار میں جھولی پھیلا کر، مانگوں تو کیا کچھ پاؤ گے اللہ کے فضل و رحمت سے دیتے ہیں خواجہ دیکھ لیا جو لے کے تمنّا آتا ہے، وہ لے کے مُرادیں جاتا ہے اندازِ طلب بھی دیکھ لیا، اندازِ عطا بھی دیکھ لیا رحمت کے خزانے بھی بے حد، خواجہ کی سخاوت بھی بے حد دیتے تو نہیں دیکھا ہے مگر، دامن جو بھرا تھا دیکھ لیا دربار معینی سے بے شک، محروم ...

نبی کے نور سے پیر و مریدِ با صفا چمکے

نبی کے نور سے پیر و مریدِ با صفا چمکےبریلی میں رضا چمکے، مدینے میں ضیا چمکے ضیا کا فیض پہنچا ناگپور، ارضِ مدینہ سےضیا کے فیض سے عبد الحلیمِ با صفا چمکے ضیاءُ الدین کے عرسِ مبارک کی تجلّی سےخدا وندا قیامت تک عمریا کی فضا چمکے ضیاءُ الدین کا بابِ کرم ہے کتنا نورانیزبانِ التجا کھولوں تو حرفِ التجا چمکے شریعت اور طریقت کی مُقدّس رہ گزاروں میںجب ان کا نقشِ پا چمکا تو لاکھوں رہ نما چمکے مدینے کے قطب کی ذات اسمِ با مسمّٰی ہےضیاءُ الدین بن کر دین ...

منقببتِ حضرت مولانا وصی احمد محدث سورتی

سنت کے حامی سنو میں لکھتا ہوں اسمائے سامیجو تشریف لاکر ہوئے دیں کے حامی محدّث مفسّر فقیہوں میں نامی!وصی احمد اُن کا ہے اسمِ گرامی ہے تحدیث کی اُن پہ بے شک تمامیشب و روز رہتے ہیں سنّت کے حامی وہ تدریس میں فی زمانہ ہیں یکتاوہ افتاء میں رکھتے نہیں مثل اپنا ہے گرچہ کمال اُن کو ہر عمل و فن پرمگر ہیں احادیث پر جان سے شیدا شب و روز کرتے ہیں دیں کی حمایتمٹاتے ہیں دنیا سے شرک و ضلالت فیوض اُن کے جاری رہیں تا قیامترہیں وہ زمانے میں باصد کرامت ب...

آمدم با کمال عجزو نیاز

آمدم با کمال عجزو نیاز آمدم با کمال عجزو نیاز بردر خواجۂ غریب نواز   خواجۂ خواجگاں معین الدین محرم سرّ حق و محرم راز   آنکہ صیب کمال رحمت او رفت رفت از ہند تا عراق و حجاز   نتواں کرد شمۂ مد حش فکر صد سال گر کند پرواز   بر جبینش شدہ حبیب اللہ مات فی حبہ ز غیب طراز   گوغریبم و لے چہ  باک مرا بر غریباں نواز دارم ناز   رحم کن رحم اے غریب نواز بر من مبتلائے سوز و گداز   وائے برمن کہ جمع نمو...

تیرے پائے کا کوئی ہم نے نہ پایا خواجہ

تیرے پائے کا کوئی ہم نے نہ پایا خواجہ تیرے پائے کا کوئی ہم نے نہ پایا خواجہ تو زمیں والوں پہ اللہ کا سایا خواجہ   ہے قلم رو میں ترے ہند کی پوری اقلیم ہند کے سارے ولی تیری رعایا خواجہ   مکر شیطاں سے مریدوں کو بچالیتے ہو اس لیے پیر تمہیں اپنا بنایا خواجہ   جوشِ مستی میں کئی آئے ہیں ایسے لمحے میں بہک جاتا مگر تم نے بچایا خواجہ   بے خودی میں ،میں خودی کو ہی خدا کہہ دیتا شکر ہے تم نے مگر یاد دلایا خواجہ   میری ...

خواجہ پیر ہندالولی

خواجہ پیر ہندالولی خواجہ پیر ہندالولی پُر آس ہمار خواجہ پیر   تم دو جگ کے نباہن ہارے ہم  تو تمرے سہار خواجہ پیر   پر یتم بھنور اتھاہ ہم دیکھا ڈرپت جیا سکوار خواجہ پیر   آن پڑا منجدھار میں بیڑا کہ بدھ اتروں پار خواجہ پیر   ڈوبت نیا پار لگاؤ تم مورے کھیون بار خواجہ پیر   ارج کرت کر جور اشرفؔی راکھ لاج ہمار خواجہ پیر  ...

خواجۂ خواجگان معین الدین

خواجۂ خواجگان معین الدین خواجۂ خواجگاں معین الدین فخر کون و مکاں معین الدین   سرّ حق رابیاں معین الدین بے نشاں رانشاں معین الدین   مظہر و جلوہ گاہ نور قدم آفتابِ جہاں معین الدین   مرشد و رہنمائے اہل صفا ہادئِ انس و جاں معین الدین   عاشقاں راد لیل راہِ یقین سدّ راہ گماں معین الدین   خواجۂِ لا مکان و قدس مقام آسماں آستاں معین الدین   قربِ حق اے نیازؔ گر خواہی ساز و ردِ زباں معین الدین...

یا خواجہ معین الدین چشتی سلطان الہند غریب نواز

یا خواجہ معین الدین چشتی سلطان الہند غریب نواز یا خواجہ معین الدین چشتی سلطان الہند غریب نواز یا واقف راز خفی و جلی سلطان الہند غریب نواز   لائی ہے مجھے امید کرم، اس خاک کی اور اس در کی قسم آیا ہوں پئے حاجت طلبی سلطان الہند غریب نواز   منہ عیش و طرب نے پھیر لیا،دن رات کے غم نے گھیر لیا سب دور ہوں میرے رنج دلی سلطان الہند غریب نواز   فریاد تمہیں سے میری، تکلیف سہی کیسی کیسی ہو داد طلب کی دادر سی سلطان الہند غریب نواز &nb...