پسندیدہ کرامات  

بیٹے کی پیدائش کے لیے دعا

بیٹے کی پیدائش کے لیے دعا حضور مفتی اعظم قدس سرہ کے خلیفہ و نواسہ حضرت مولانا الشاہ خالد علی خاں بریلوی کے داماد مولانا الشاہ محتشم رضا خاں قادری ساکن محلّہ سوداگران ہر روز حضرت کی خدمت میں حاضر باش ہوکر فیضیاب ہوا کرتے ہیں۔ ایک دن مجھ سے میرے بچوں کے بارے میں معلومات حاصل کر رہے تھے کہ پلٹ کر میں نے بھی محتشم میاں سے ان کی اولاد کے بارے میں دریافت کرلیا، کہنے لگے کہ تین لڑکیاں ہیں اور ایک لڑکا ہے، جو حضرت تاج الشریعہ کی دعاوؤں کا مرہون منت ہے۔ ...

والد ماجد کی کرامت

والد ماجد کی کرامت حضرت علامہ مفتی عبد الواحد قادری امیر شریعت ہالینڈ کا بیان ہے کہ صاحبزادۂ مفسر اعظم ہند حضرت علامہ شاہ مفتی اختر رضا خاں صاحب اور حضرت مولانا شمیم اشرف صاحب دونوں ساتھ ساتھ تحصیل علم کے لیے جامعہ ازہر مصر تشریف لے گئے تھے۔ مولانا شمیم اشرف صاحب مصر ہی میں تھے کہ انڈیا میں ان کے والد ماجد کا انتقال ہوگیا۔ مولانا شمیم احمد صاحب ازہری نے اس سانحہ کی اطلاع بذریعہ خط حضور مفسر اعظم ہند کو دی۔ حضرت نے اس خط کو پڑھ کر نمدید گی کے سات...

ہوائی جہاز کا واپس آنا

ہوائی جہاز کا واپس آنا ۷؍ اکتوبر ۲۰۱۵ء کو بعد نماز ظہر قادری رائس میل بہیٹر ضلع بریلی میں بیعت و ارشاد کا جلسہ مولانا مختار احمد قادری نے منعقد کیا تھا۔ حضرت تاج الشریعہ کے ہمراہ راقم کے علاوہ مولانا محمد عاشق حسین کشمیری اور مفتی شعیب رضا قادری بھی تھے۔ محترم مفتی صاحب نے اپنی تقریر میں اپنا عینی مشاہدہ بیان کیا کہ گزشتہ سال حضرت کے ہمراہ زمبابوے کے شہر ہرارے کے ائر پورٹ پر ہم لوگ دوسرے شہر کی فلائٹ پکڑنے کے لیے پہنچے، تاخیر ہو جانے کی وجہ سے ا...

ہر دل عزیز قائد پر فخر

ڈاکٹر مولانا غلام زرقانی بن رئیس التحریر علامہ ارشد القادری مقیم ہوسٹن (امریکہ) کا بیان ہے کہ چند سال قبل جمشید پور میں ایک مسجد کی سنگ بنیاد کے جلسہ میں حضرت تاج الشریعہ کے ساتھ میں بھی شریک تھا۔ رانچی ایر پورٹ پر انسانوں کا ایک طوفان استقبال کے لیے حاضر تھا۔ جوں ہی حضرت موصوف باہر تشریف لائے لوگ دست بوسی کے لیے ٹوٹ پڑے۔ بڑی مشکلوں سے مجمع کو قابو میں کیا گیا۔ جب جمشید پور پہنچے تو یہی عالم تھا۔ لوگوں کا شوق جنوں خیز دیکھنے کے قابل تھا۔ جذبات کے...

ہجوم غیر مسلمان

حافظ محمد شمس الحق رضوی ڈائریکٹر رضا ہوزری لدھیانہ (پنجاب) اپنے ایک مضمون میں لکھتے ہیں کہ میں ہندوستان کے جس ضلع سے تعلق رکھتا ہوں وہ ہندوستان کا مردم خیز، علمی و تاریخی شہر سیتا مڑھی ہے، جہاں ایک سے ایک علم و فن کے شہسوار پیدا ہوئے۔ اسی ضلع کا ایک معروف قصبہ پوکھر پراشریف ہے، جہاں اپنے وقت کے عارف باللہ سیدنا عبدالرحمٰن سرکار محیی پوکھرپروری ہیں۔ آپ اعلیٰ حضرت کے احب الخلفاء میں سے ہیں۔ جنہوں نے اس پورے علاقے میں اسلام و سنیت کی بے لوث خدمات ان...

نماز کے لیے ٹرین کارکنا

نماز کے لیے ٹرین کارکنا ۱۱؍ مارچ ۲۰۱۵ء کو حضرت تاج الشریعہ، بنارس کے لیے کاشی وشو ناتھ ایکسپریس سے روانہ ہوئے۔ عصر کی نماز بریلی جنکشن پر ادا فرمائی۔ مغرب شاہجہانپور میں ادا کی اور عشاء کے وقت ٹرین لکھنؤ پہنچ گئی۔ اسٹیشن پہنچنے سے پہلے حضرت بیت الخلاء گئے، جب حاجت سے فارغ ہوئے، تو ٹرین کے چھوٹنے کا وقت ہوگیا، حضرت جب بیت الخلاء سے باہر تشریف لائے اس وقت تک ٹرین روانہ نہیں ہوئی تھی، مگر چند لمحہ میں ٹرین چلنے لگی، حضرت نماز عشاء ادا کرنے کے لیے ج...

نماز جنازہ کے بعد بارش

شیر بیشۂ اہل سنت مولانا حشمت علی خاں پیلی بھیتی علیہ الرحمہ کے صاحبزادے مولانا احمد مشہور رضا کا ۱۹؍ ستمبر ۲۰۱۵ء کو انتقال ہوگیا۔ انتقال کی اطلاع حضرت تاج الشریعہ کو کرائی گئی کہ مولانا احمد مشہور رضا صاحب نے نماز جنازہ پڑھانے کے لیے حضرت کے نام وصیت کی ہے۔ موجودہ وقت میں بریلی شہر سے پہلی بھیت کا راستہ وایا نواب گنج بہت خراب ہے، روڈ پر اینٹ پتھر کا کام چل رہا ہے۔ نہایت خراب راستہ ہونے کے باوجود بھی حضرت نے نماز جنازہ پڑھانے کی منظوری عطا فرمادی۔...

نغمہ و ترنم کا سماں

مشہور قلم کار و ادیب مولانا مفتی شمشاد حسین رضوی پرنسپل مدرسہ شمس العلوم بدایوں شریف بیان فرماتے ہیں کہ ایک دن ہم تمام طالب علم حضرت قاضی کے شمس الدین جونپوری کے درس میں موجود تھے، اور حضرت پڑھا رہے تھے کہ ایک بزرگ صفت انسان تشریف لائے۔ قاضی صاحب نے کھڑے ہوکر ان کا استقبال کیا۔ آنے والے کو اپنی مسند پر بٹھایا، اور خود مؤدب ہوکر بیٹھ گئے، اور طالب علموں کے ذہن و دماغ میں کیا تاثر ابھرا؟ اس کو میں نہیں بتا سکتا۔ البتہ میں نے یہ محسوس کیا۔ قاضی صاحب...

میری زندگی کا ناقابل فراموش دن

مولانا مبشر الاسلام نوری دار العلوم فیض العلوم جمشید پور (جھاڑ کھنڈ) کہتے ہیں کہ: ادھر سے کون گزرا تھا کہ اب تک دیار کہکشاں میں روشنی ہے بلاشبہ حضرت کی ذات اندھیری رات کے مسافروں کے لیے مشعل ہدایت اور مینارہ نور کی حیثیت رکھتی ہے۔ ان کا فضل و کمال دلکش اور نکھری ہوئی شخصیت ہی کچھ ایسی ہے کہ دیکھنے والا فوراً متاثر ہوجاتا ہے۔ اور آپ کا گرویدہ ہوجاتا ہے، میری زندگی کا وہ تابناک اور نا قابل فراموش دن تھا۔ جب مرشد برحق کا پہلا دیدار ہوا تھا۔ اور...

مقدمہ میں کامیابی ایک کرامت

علامہ مفتی عبد المنان کلیمی شہر مفتی مراد آبادی و شیخ الحدیث جامعہ اکرم العلوم لال مسجد کا بیان ہے کہ فقیر نے عرصہ ۱۹۸۵ء سے مخدومی تاج الشریعہ کی خدمت و مجلس اور بعض اہم اسفار میں معیت و رفاقت کا شرف حاصل کر چکا ہے، میں نے ہر بار حضرت قبلہ کو تصلب فی الدین کا مظہر اتم، اور اپنے اسلاف کے ہمہ گیر اخلاق و اوصاف اور علم وفضل کا سچا جانشین پایا۔ جب کسی عنوان پر آپ کا قلم اٹھتا ہے، تو ایسا محسوس ہوتا ہے کہ سیدنا اعلیٰ حضرت کا قلم سیال رواں دواں ہے۔ اور...