میں تمہارا خیر وخواہ ہوں

میری نصیحت قبول کرو میں تمہارا خیر خواہ ہوں میں اپنے سے اور تم سب سے جدا ہوں      تمام وہ امور جن میں (تم) مشغول ہو میں ان سے علیحدہ ہوں۔[1]

 

[1] (فیوضِ غوثِ یزدانی  ترجمہ الفتح الربانی، ص ۲۱۰)


متعلقہ

تجویزوآراء