پسندیدہ مضامین  

حضور تاج الشریعہ اور فروغ تعلیم

عالم اسلام کی عبقری شخصیت حضور تاج الشریعہ مدظلہ العالی کے ’’فروغ تعلیم‘‘ کو میں نے اپنا موضوع سخن بنایا ہے۔ سمجھ میں نہیں آتا کہ آخر علم و فن کے کن کن پہلوؤں کا جائزہ لوں اور کن کو نظر انداز کروں؟ شکار ماہ یا تسخیر آفتاب کروں میں کس کو ترک کروں کس کا انتخاب کرو باتیں زیادہ، صفحات کم ہیں۔ کائنات علم کو آخر مٹھی میں بند کون کرسکتا ہے اور وہ بھی اس وقت جب کہ ممدوح کے گھر کا بچہ بچہ علم و فن کا کوہ ہمالہ ہو، پورا کا پورا...

کونڈوں کی شرعی حیثیت

کونڈوں کی شرعی حیثیت از: مفتی محمد اکرام المحسن فیضی سوال: کیا فرماتے ہیں علمائے دین و مفتیانِ شرعِ متین اس مسئلے کے بارے میں کہ کونڈوں کی شرعی حیثیت کیا ہے؟ قرآن و حدیث کی روشنی میں جواب دیں۔ الجواب بعون الملک الوھاب اللھم ھدایۃ الحق والصواب ہمارے ہاں اسلامیانِ پاک و ہند میں ۲۲؍ رجب المرجب کو ائمۂ اہلِ بیت بالخصوص حضرت سیّدنا امام جعفر صادق﷜ کی فاتحہ کے لیے کونڈوں کا اہتمام کیا جاتا ہے،جو بلا شبہ جائز و مباح مستحسن امر ہے اور اس کا انکار محض...

"حضور تاج الشریعہ خانوادۂ رضویہ کا ’’مرد حق آگاہ

یہ سحر جو کبھی فردا ہے، کبھی ہے امروز نہیں معلوم کہ ہوتی ہے کہاں سے پیدا وہ سحر جس سے لرزتا ہے شبستان وجود ہوتی ہے بندۂ مومن کی اذاں سے پیدا مجھے یہ جان کر بے حد مسرت ہوئی کہ ہند و پاک کے صحافتی ادارے اور جامعات کے ارباب عالم و دانش وارث علوم امام احمد رضا، جانشین حضور مفتی اعظم ہند، تاج الشریعہ حضرت علامہ مفتی اختر رضا خاں صاحب قبلہ ازہری نور اللہ مرقدہ ادام المولی فضلہ کے ایوان علم و عمل اور ان کی تابناک زندگی کے مختلف گوشوں کو اپنی عقیدتو...

بشر اختر ہوجائے تو ہر گز مرتا نہیں

یہ انسانی فطرت ہے کہ انسان جب کسی شخصیت سے متاثر ہوتا ہے، اس کا عقیدت مند ہوجاتا ہے اور اس کی یہ عقیدت اس وقت تک سلامت رہتی ہے جب تک وہ اس شخصیت سے دور رہتا ہے اور جب قریب ہوتا ہے تو بشری کمزوریاں نظر آتی ہیں تو اس کی عقیدت میں نسبتا کمی آنے لگتی ہے اسی طرح کوئی بھی با رعب و با وقار انسان اپنا رعب و وقار پہلی دوسری یا کبھی کبھی کی ملاقات میں تو سلامت رکھ پاتا ہے مگر مسلسل ساتھ رہنے والوں اور اکثر ملتے رہنے والوں پر اس کا وہ رعب نہیں رہتا جو پہلے ...

سنیت کی جان تھے ہمارے چچا

ایک عظیم خسارہ ہے۔ ان کے وصال سے ہر سنی کو دلی صدمہ پہنچا۔ پوری دنیائے سنیت کاہر خطہ سوگوار ہوگیا۔ خاندان اعلیٰ حضرت ہی کو ان کے جانے کا غم نہیں بلکہ اہل سنت و جماعت کے ہر فرد کو دکھ ہے۔ عالم سنیت کے درد و کرب اور غم و اضطراب کو الفاظ کا جامہ پہنانا نہایت مشکل ہے۔ بلاشبہ وہ ہمارے خاندانی بزرگوں کے علم و فضل کی نشانی تھے۔ خاندان اعلیٰ حضرت کی ہی نہیں بلکہ وہ سنیت کی آبرو تھے۔ اس کی آن بان اور شان تھے۔ اللہ رب العزت نے اپنے حبیب پاک صاحب لولاک صلی...

ولایت کا معیار تقوی

بر صغیر ہندو پاک میں اسلام کی سر بلندی اور اس کی ترویج و اشاعت صوفیائے کرام ہی کی مرہون منت ہے، جنہوں نے علم، و عمل، رشد و ہدایت کے انوار سے ایک جہاں کو منور کیا اور ہزاروں ہزار گم گشتگان راہ راست سے ہمکنار کیا، تشنگان علم و معرفت کو اپنے علمی اور روحانی جام سے شاد کیا، جن کی آفاقی تعلیمات، روحانی اور اخلاقی عظمت نے جوق در جوق لوگوں کو دامن اسلام میں پناہ لینے پر مجبور کر دیا، جن کی دینی، علمی، فکری، روحانی اور اصلاحی خدمات کو آب زر سے لکھا جائے ...

افریقہ میں یاد تاج الشریعہ

دیکھنے والوں جی بھر کے دیکھو ہمیں پھر نہ کہنا کہ اختر میاں چل دئیے مؤرخہ ۲۰؍ جولائی ۲۰۱۸؁ ء بروز جمعہ شام کے وقت جیسے ہی یہ خبر جانکاہ پردۂ سماعت سے ٹکرائی کہ وارث علوم اعلیٰ حضرت، نبیرۂ حجۃ الاسلام، شہزادۂ مفسر اعظم ہند پیشوائے اہل سنت قاضی القضاۃ فی الہند حضرت علامہ مفتی اختر رضا خاں بریلوی نے داعی اجل کو لبیک کہا تقریباً ہر سنی صحیح العقیدہ شخص اور آپ کے مریدین و متوسلین اپنی اپنی جگہ پر کچھ لمحوں کےلیے حامد و ساکت رہ گئے اور پھر ساؤتھ افر...

فکر و فن کے آسماں تھے حضرت اختر رضا

مجدد اعظم اعلیٰ حضرت امام احمد رضا رضی اللہ تعالیٰ عنہ کے گلستان و چمن کے گل برگ نا قابل فراموش ہیں کہ جو اللہ و رسول کے فضل و کرم سے اہل سنت و جماعت کے سروں پر ابر کرم بن کر چھائے رہتے ہیں کیونکہ ان کی رگوں میں حضور انور صلی اللہ تعالیٰ علیہ وسلم کے اس عاشق صادق کا خون دوڑ رہا ہے کہ جماعت اہل سنت جس کے عظیم احسانات و جلیل خدمات سے زندہ و جاوید بنی ہوئی ہے۔ اسی گلستان مقدس سے برابر ہمیں ایسی شخصیات والا صفات کی علمی و روحانی قیادت نصیب ہوتی رہی ہ...

تاج الشریعہ ایک ہمہ جہت شخصیت

عصر حاضر میں حضرت تاج الشریعہ علیہ الرحمہ کی ذات ہر لحاظ سے منفرد اور یگانۂ روز گار اور عبقری نظر آتی ہے۔ وہ اپنے معاصرین میں ایسے چمکتے ہوئے نظر آتے ہیں جیسے ستاروں کے درمیان چاند چمکتا ہے۔ قطب عالم سیدی سرکار مفتی اعظم ہند اور حضرت جیلانی میاں کی آغوش تربیت میں پروان چڑھ کر آپ کی شخصیت میں ایسا نکھار پیدا ہو کہ آپ کی زندگی مفتی اعظم کی زندگی کا آئینہ بن گئی۔ آپ کی زندگی کو دیکھنے والا کوئی دشمن اور حاسد بھی یہ ثابت نہیں کرسکتا کہ آپ کا کوئی قدم...

حضور تاج الشریعہ بحیثیت استاذ کامل

استاذ العلماء، قاضی القضاۃ فی الہند جانشین حضور مفتی اعظم اہند، نادر روز گار عبقری شخصیتوں میں سے ایک ہیں جنہیں اللہ تعالیٰ نے بے شمار خوبیاں اور محاسنؔ و کمالات سے نوازا، اعلیٰ حسب و نسب، خاندانی رعب و دبدبہ، دین حق پر استقامت، فیوض و برکات و کرامات، پاکیزہ سیرت و اخلاق، درس و تدریس، بحث و تحقیق کی اعلیٰ بصیرت، لا جواب علمی استحضار و خدا داد فنی صلاحیت، فصاحت بیان و بلاغت لسان پر زبردست قدرت، فقہ افتاء میں بے مثال مہارت و حذاقت جیسے اوصاف حمیدہ ...